کورونا 193 ممالک تک پھیل گیا ،14777 اموات ، سعودی عرب میں جزوی کرفیو ، امریکا میں مارشل لا پر غور

411

 

روم/میڈرڈ/واشنگٹن/تہران/قاہرہ/مسقط/ ریاض/ لندن/غزہ(صباح نیوز+آن لائن+اے پی پی)کورونا وائرس 193ممالک تک پھیل گیا،د نیا بھر میںوائرس سے ہلاکتوں کی تعداد 14 ہزار 777 اورمتاثرہ افراد کی تعداد 3 لاکھ 43ہزار421 سے تجاوز کر گئی جب کہ97 ہزار636افراد صحت یاب ہوچکے ہیں۔ سعودی عرب میں خادم حرمین شریفین شاہ سلمان عبدالعزیز نے کورونا وائرس کے پھیلائو کو کنٹرول کرنے، شہریوں اور مقیم غیر ملکیوں کی صحت اور سلامتی کو مدنظر رکھتے ہوئے روزانہ شام7 سے صبح 6 بجے تک 21 روز کے لیے ملک بھر میں جزوی کرفیو نافذ کرنے کا حکم جاری کردیا ہے جب کہ برطانو ی
میڈیا نے دعویٰ کیا ہے کہ امریکا میں مارشل لا پر غور کیا جا ر ہا ہے ۔برطانوی جریدے نے دعویٰ کیا ہے اگر سیاسی قیادت بھی کورونا وائر س کا شکار ہو ئی تو امریکا میں مارشل لا لگایا جا سکتا ہے۔ کورونا وائرس کے باعث گزشتہ 24 گھنٹے کے دوران سب سے زیادہ ہلاکتیں اٹلی میں ریکارڈ کی گئیں،جہاں مزید 651 ہلاکتوں سے مجموعی تعداد 5 ہزار 474 ہوگئی ہے۔اسپین میں ایک ہزار 756، ہالینڈ میں43افراد جان کی بازی ہار گئے، چین میں وائرس نے مزید6افراد کی جان لے لی، جہاںمرنے والوں کی تعداد 3270 ہو گئی ،ایران میں 1685،برطانیہ میں 281 اور فرانس میں 674افراد ہلاک ہوگئے ہیں۔جنوبی کوریا میں 111، جرمنی میں ہلاکتوں کی تعداد 94ہو گئی ،بھارت میں کورونا سے7 افراد ہلاک اور395 افراد متاثرہیں۔سعودی عرب میں کل تعداد بڑھ کر 511 ہوگئی ہے۔امریکا میں کورونا سے ایک روز میں 145 افراد ہلاک ہوئے اور مرنے والوں کی تعداد 414 ہو گئی ہے۔امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے نیو یارک اورکیلی فورنیا کو آفت زدہ علاقہ قرار دے دیا ہے۔ ٹرمپ کا کہنا ہے کہ کورونا ایک مشکل اور پیچیدہ دشمن ہے،اس کے خلاف جنگ میں جلد فتح حاصل کریں گے۔ ٹرمپ نے کہاکہ کورونا وبا ظاہر ہوتے وقت چین کو ہمیں مطلع کرناچاہیے تھا۔ایرانی سپریم لیڈر آیت اللہ خامنہ ای نے کہا ہے کہ کورونا سے متعلق امریکی مدد پر بھروسہ نہیں، ہم کورونا وائرس سمیت ہر قسم کے بحران پر قابو پا سکتے ہیں ۔آیت اللہ خامنہ ای نے شک کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ شبہ ہے کہ وائرس امریکا نے تخلیق کیا۔مصر میں کورونا وائرس سے متاثر ہونے والے مسلح افواج کے میجر جنرل خالد شلتوت چل بسے ہیں۔مصری ذرائع ابلاغ کے مطابق میجر جنرل خالد شلتوت کی کورونا سے ہلاکت کے باعث فوج میں صدمے اور سوگ کی کیفیت ہے۔سلطنت اومان نے کورونا وائرس کے پھیلائو کو روکنے کے لیے خصوصی اقدامات کے تحت اخبارات و رسائل سمیت مختلف قسم کے لٹریچر کی اشاعت و تقسیم پر بھی پابندی لگا دی ہے۔اومان کی جانب سے کورونا وائرس سے نمٹنے کے لیے اعلیٰ سطح کی کمیٹی قائم کردی گئی ہے۔ کمیٹی نے فیصلہ کیا ہے کہ بیرون ملک جاری ہونے والے لٹریچر اور اخبار و رسائل کی اشاعت اور تقسیم معطل کردی ہے جبکہ سرکاری اداروں میں صرف 30 فیصد ملازمین کام کررہے ہیں۔فلسطین کے علاقے غزہ میں حکام نے کورونا وائرس کے پہلے 2 کیسز کی تصدیق کردی۔حکام کے مطابق 2 فلسطینی شہری اس وائرس سے متاثر ہوئے جنہوں نے پاکستان کا سفر کیا تھا اور واپس لوٹنے پر انہیں قرنطینہ میں رکھا گیا تھا۔دوسری جانب کورونا وائرس کے تیزی سے پھیلا ئو سے برطانوی شاہی خاندان بھی مسائل سے دوچار ہے، جس کے بعد اس بات کے امکانات زیادہ ہوگئے ہیں کہ جلد ہی عارضی طور پر شہزادہ ولیم بادشاہت کے فرائض سر انجام دیں گے۔ملکہ برطانیہ اور ان کے بیٹے شہزادہ چارلس کی جانب سے کورونا وائرس سے بچنے کے لیے شاہی محل چھوڑ کر دوسری جگہ منتقل ہونے کے بعد اس بات کے قوی امکانات پیدا ہوگئے ہیں کہ شہزادہ ولیم عارضی طور پر بادشاہت کے فرائض سر انجام دیں گے۔ عالمی وبا کی وجہ سے ملکہ برطانیہ اور ان کے جانشنین بیٹے شہزادہ چارلس کی جانب سے خود کو انتظامی سرگرمیوں سے محدود کیے جانے کے بعد یہ امکانات پیدا ہوگئے ہیں کہ شہزادہ ولیم عارضی طور پر بادشاہ بنیں گے۔