مرضی………………اجمل سراج

345

فرضی دنیا کی ہے دولت ساری
ساری دنیا کی ہے طاقت فرضی

کہتے پھرتے تھے جو مرضی میری
اب کہو اُن سے چلائیں مرضی