کورونا وائرس کےباعث کراچی ویران ہوگیا

698
کورونا وائرس پھیلانے کے خطرے کے پیش نظر کراچی صدر کی مارکیٹ بند اور سڑکیں ویران نظر آرہی ہیں(تصویر :محمد احمد)

کورونا وائرس کےباعث کراچی ویران ہوگیا، کھیل کےمیدان سنسان ہوگئے،کورونا کے خوف نے عوام کو گھروں میں بندرہنے پر مجبور کردیا۔

تفصیلات کے مطابق کورونا وائرس سے بچاؤ کے لیے شہر بھر کی مارکیٹس ، آن لائن بس سروس ، سیروتفریح کے جگہیں بند کردی گئیں۔

شہر قائد میں کوروناسے متاثر افراد میں اضافے کے باعث تمام شاپنگ مال، ریستوران اور بازاربند کردیئے، ریسٹورینٹس سے کھانا لے جانے اور گھر پہنچانے کی اجازت ہونے کے باوجود ہوٹلز بند نظرآئے۔

کورونا وائرس کی وجہ سے پبلک ٹرانسپورٹ بھی سڑکوں پر نہ ہونے کے برابر ہے۔

واضح رہے کہ کورونا وائرس کے پیش نظر سندھ حکومت نے جزوی لاک ڈاؤن کا حکم دیا تھا، جس کے بعد صدر الیکٹرانکس مارکیٹ، جامع کلاتھ، لائٹ ہاؤس، لی مارکیٹ، کپڑا مارکیٹ، آرام باغ فرنیچر مارکیٹ، اکبر مارکیٹ سمیت متعدد مارکیٹیں بند ہیں ۔

تاہم میڈیسن مارکیٹ، طبی مراکز، میڈیکل اسٹورز، ہومیوپیتھک اسٹورز کے ساتھ ساتھ بیکری اور گلی محلے میں کھانے پینے کی دکانیں کھلی ہیں۔

کراچی میں اقتصادی و معاشی سرگرمیاں معطل ہونے کی وجہ سے نقل وحمل کم ہے اور لوگ گھروں تک محدود ہوگئے ہیں۔

کورونا وائرس کے خطرات کے پیش نظر حکومت نے عازمین حج کی تربیتی پر وگرام بھی معطل کردیے۔

وبا پھیلنے کے پیش نظر شادی ہالز ، تمام تعلیمی ادارےسمیت سرکاری ادارے بھی بند ہیں، صرف چند ہی سرکاری ادارے کھلے رکھنے کا حکم دیا ہے، جس میں شعبہ بلدیات ،زراعت وغیر ہ شامل ہیں۔

خیال رہے کہ سندھ میں کرونا سے متاثر افراد کی تعداد259ہوگئی ہے، جبکہ گذشتہ روز وزیر اعلی سندھ مراد علی شاہ کا کہنا تھا کہ سرکاری اسپتالوں نے1784 مشتبہ افراد کی رپورٹ دی ہے۔