امریکا میں فائرنگ سے 5 افراد ہلاک‘ 2 زخمی

158

جیفرسن سٹی (انٹرنیشنل ڈیسک) امریکی ریاست میسوری میں ایک شخص نے چلتی گاڑی سے کئی مقامات پر فائرنگ کے بعد غذائی مواد کے ایک اسٹور میں گھس کر اندھا دھند گولیاں چلا دیں جس کے نتیجے میں ایک پولیس افسر سمیت 4 افراد ہلاک ہو گئے جب کہ اسی دوران حملہ آور نے خود کو بھی گولی مار کر خودکشی کرلی۔ خبر رساں اداروں کے مطابق 32 سالہ مسلح شخص اپنی گاڑی چلانے کے دوران مختلف مقامات پر فائرنگ کرتا رہا۔ اسپرنگ فیلڈ پولیس کے مطابق حملہ آور ایک گیس اسٹیشن کے قریب اسٹور پر پہنچا اور اندر داخل ہوکر اندھا دھند گولیاں چلا دیں، جس کے نتیجے میں اسٹور کے 2 ملازم اور ایک خریدار ہلاک ہو گئے۔ اطلاع ملتے ہی پولیس جائے وقوع پر پہنچی جس پر حملہ آور نے فائرنگ کی اور 2 اہل کاروں کو نشانہ بنایا جس میں ایک جانبر نہ ہو سکا جبکہ دوسرے زخمی اہل کار کو طبی امداد کے لیے اسپتال منتقل کیا گیا ہے۔ ترجمان پولیس کے مطابق واقعے کی تحقیقات شروع کردی گئی ہے۔ پولیس سربراہ پاؤل ولیم کا کہنا تھا کہ ہیڈ کوارٹر کو رات گئے شہر کے شمالی اور جنوبی حصے میں فائرنگ کی اطلاعات موصول ہوئی تھیں۔ پولیس کو شبہہ ہے کہ تمام کارروائیاں ایک ہی حملہ آور کی ہیں، جو بڑی تیزی سے مختلف مقامات تک کا سفر کرتا رہا۔ حملہ آور کئی مقامات پر فائرنگ کرتا ہوا گزرگیا،تاہم ایک گیس اسٹیشن کے قریب سپر اسٹور میں گھس کر اس نے باقاعدہ لوگوں کو نشانہ بنایا۔ فائرنگ کی آواز سن کر گشت کرنے والا ایک پولیس افسر وہاں پہنچا اور فائرنگ کا نشانہ بن گیا۔ پولیس کا کہنا ہے کہ مشتبہ حملہ آور جیکوین ایس رومن ہے، جو دارالحکومت ہی کا رہایشی ہے۔ واضح رہے کہ امریکا میں ہر سال ہزاروں افراد فائرنگ کے واقعات میں ہلاک اور زخمی ہوجاتے ہیں۔