عالمی برادری کو پاکستان کا قرضہ معاف کرنے کی کوئی صورت نکالنی ہوگی،وزیر اعظم

392

اسلام آباد: وزیر اعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ عالمی برادری کو پاکستان جیسے ممالک کیلیے قرضوں کی معافی کی کوئی صورت نکالنے کا سوچنا ہوگا۔

وزیراعظم عمران خان نے امریکی خبر ایجنسی کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا کہ کورونا وائرس دنیا کے ترقی پذیر ممالک کی معیشتوں کو تباہ کرسکتا ہے، کورونا وائرس سے پیدا بحران سے ترقی پذیر ممالک میں بھوک اورغربت پھیلنے کا ڈرہے، ترقی یافتہ معیشتوں کا اقدام کمزور معیشتوں کو کورونا وائرس  کے بحران سے لڑنے میں مدد دے گا۔

وزیر اعظم نے اپنے انٹرویو میں کہا کہ پاکستان کے پاس کسی بڑے بحران سے نمٹنے کیلیےعلاج کی سہولیات ہیں نہ وسائل، کورونا وائرس سے پاکستان، بھارت اور افریقی ممالک کو یکساں بحران کا سامنا ہوگا، پاکستان کی برآمدات متاثر ہونگی، بیروزگاری میں اضافہ ہوگا، پاکستان جیسے ممالک کو کورونا وائرس سے بدترین معاشی بدحالی کا خدشہ ہے۔

انہوں نے کہا کہ آئی ایم ایف کا قرضہ پاکستان کے لیے ناممکن معاشی بوجھ بن جائے گا، عالمی برادری کو پاکستان جیسے ممالک کیلیے قرضوں کی معافی کی کوئی صورت نکالنے کا سوچنا ہوگا، اگرکورونا کی صورتحال سنگین ہوئی توکمزورمعیشت کو بچانے میں ناکام ہوجائینگے، پاکستان کی معیشت کو بچانےکی کوشش کررہے ہیں۔

وزیر اعظم نے مزید کہا کہ مشرق وسطیٰ میں کورونا سے بدترین متاثر ایران پر سے پابندیاں ہٹائی جائیں، ترقی یافتہ ممالک غریب ممالک کے قرضے معاف کرنے کے لیے تیار رہیں۔