کمپنیوں کی آمدن میرے ذاتی اثاثے نہیں، جہانگیر ترین

106

اسلام آباد(آن لائن) وزیر اعظم عمران خان کے معتمد خاص اور تحریک انصاف کے رہنما جہانگیر ترین نے موجودہ دور حکومت میں آمدن سے زائد اثاثے بڑھنے سے متعلق میڈیا رپورٹس کو بے بنیاد قرار دیتے ہوئے مسترد کر دیا۔ اپنے ایک وضاحتی بیان میں جہانگیر ترین نے کہا ہے کہ کمپنی جے ڈی ڈبلیو کی کل ریونیو کو ان کی ذاتی آمدن ظاہر کر کے پیش کیا گیا ہے جو بالکل نامناسب اور حقائق کے برعکس ہے ،ان کا مزید کہنا تھا کہ 2018ء میں ان کمپنیوں کی سالانہ آمدن 57 ارب تھی جبکہ2019 میں کم ہو کر 48 ارب روپے رہ گئی، ان کمپنیوں کے اثاثے اور آمدن میرے ذاتی اثاثے نہیں، میڈیا پر چلنے والی خبریں بے بنیاد اور من گھڑت ہیں، ان رپورٹس میں کوئی سچائی نہیں۔ انہوں نے کہا کہ کمپنیوں کے اثاثے اور آمدن میرے ذاتی اثاثے تصور نہیں کیے جاسکتے۔ جہانگیر ترین نے کہا کہ میڈیا رپورٹ میں میری کمپنیوں کی مکمل آمدن کو میرے ذاتی اثاثوں میں مکس اپ کرکے غلط ثاثر پید اکرنے کی کوشش کی گئی ہے۔ رپورٹ میں یہ بات بھی حقائق کے برعکس بتائی گئی ہے کہ انہوں نے ایک ٹی وی شو میں آمدن میں اضافے بارے رپورٹ کو تسلیم کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ان کی کمپنیوں جے ڈی ڈبلیو کے واحد مالک وہ اکیلے نہیں ہیں بلکہ دیگر افراد بھی ان کی کمپنیوں کے شیئرز رکھتے ہیں ۔ اس لیے کمپنیوں کی آمدن اور اضافے کو ان کی ذاتی آمدن کسی بھی صورت تصور نہیں کیا جاسکتا۔