ضیاء الحق کے قتل میں امریکی ایجنسی سی آئی اے ملوث تھی،اسلم بیگ

139

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) سابق آرمی چیف اسلم بیگ نے دعویٰ کیا ہے کہ جنرل ضیا الحق کے قتل میں امریکی ایجنسی سی آئی اے ملوث تھی۔تفصیلات کے مطابق سابق آرمی چیف اسلم بیگ نے کہا ہے کہ 1988 میں جنرل ضیا ء کا طیارہ کسی حادثے میں تباہ نہیں ہوا تھا بلکہ طیارہ کے گرنے کے پیچھے سی آئی اے کی سازش تھی۔ اسلم بیگ نے خبر رساں ایجنسی کو انٹر ویو دیتے ہوئے کہا کہ جب میں
آرمی چیف تھا ، طیارہ حادثے سے متعلق انکوائری رپورٹ میں امریکی ایجنسی سی آئی اے کے کردار کو مشکوک قرا ر دیا گیا تھا۔ ضیاء الحق پاکستان کی فوج کے سابق سربراہ تھے جنہوں نے 1977ء میں اس وقت کے پاکستانی وزیر اعظم ذوالفقار علی بھٹو کی حکومت کا تختہ الٹ کر مارشل لاء لگایا اور بعد ازاں ملک کی صدارت کا عہدہ بھی سنبھال لیا۔17 اگست 1988 کو بہاولپور میں ان کا طیارہ گر کر تباہ ہو گیا تھا۔ ان کے علاوہ طیارے میں امریکی سفیر آرنلڈ لیوس رافیل اور دیگر اعلیٰ عہدیداران سوار تھے۔ جبکہ دوسری جانب ان کے بیٹے اعجاز الحق جو وفاقی وزیر بھی رہ چکے ہیں نے الزام عائد کیا تھا کہ ضیاء الحق کا طیارہ تباہ کرنا جنرل اسلم بیگ اور نیشنل سیکورٹی ایڈوائرزر محمودعلی درانی کی سازش تھی۔ جس کے بعد الزامات مسترد کردیے گئے۔