ملیرمیں سفاک شوہر کا اپنی بیوی پر وحشیانہ تشدد ،شوہر کو گرفتار کرلیاگیا ،

695

کراچی(اسٹاف رپورٹر)کراچی کے علاقے ملیرمیں سفاک شوہر کا اپنی بیوی پر وحشیانہ تشدد ،معصوم بچے بھی چھین لیے ۔بنت حوا سمیرہ انصاف کے لیے دربدر چار روز گزر گئے ،بیوی کو بدترین تشدد کا نشانہ بنانے والے سفاک شوہر کو گرفتار کرلیا۔

تفصیلات کے مطابق سعود آباد کی رہائشی سمیرہ نے الزام عائد کیا ہے کہ اس کے سفاک شوہر شہباز نے الزام لگاکر بدترین تشدد کیا سر کے بال بھی کاٹ دیئے ۔واقع کی اطلاع پر ملیر ٹوکن کے علاقے میں پولیس پہنچی شہباز کو حراست میں لینے کے بعد چھوڑ دیا ۔میری طبیعت خراب تھی میرا شوہر خود ایک دم درود کرنے والے عامل کو گھر لیکر آیا ۔عامل مجھے دم کرکے جاتا تھا میرے شوہر نے کہا تم اس سے پیسے ادھار مانگو۔میں نے پیسے ادھار مانگنے سے منع کردیا جس پر شوہر سخت ناراض ہوا مگر عامل کو پھر بھی گھر لاتا رہا ۔

چار روز قبل اس عامل نے میرے موبائل نمبر پر بیہودہ مسیج کیا جو میں نے شہباز کو دکھایا ۔مسیج دیکھ کر شہباز نے مجھے لاتوں گھونسوں اور ڈنڈوں سے بدترین تشدد کیا۔شوہر نے تشدد کرتے ہوِئے چہرےسر اور ٹانگوں کو نشانہ بنایا سر کے بال بھی کاٹ دیئے ۔شہباز نے تشدد کرتے ہوئے میری گردن پر جان سے مارنے کی نیت سے چھری بھی چلائی جس کے نشان موجود ہیں۔شوہر نے تشدد تو کیا ہے میرے دو بچے بھی چھین لیے ہیں زندگی بھر رلانے کی دھمکی دے رہا ہے۔

سمیرہ کے والد نے بتایا کہ میں واقعے کی اطلاع پر جب پہنچا تو شہباز نے مجھے بھی مارا ۔پولیس قانونی کارروائی کرنے کے بجائے صلح کرنے کا بول رہی ہے ، دوسری جانب میڈیا رپورٹ پر ایس ایچ او تھانہ سعود آباد زبیر السلام نے مظلوم عورت کی فریاد سنتے ہوئے اپنی بیوی کو بدترین تشدد کا نشانہ بنانے والے شوہر شہباز کو گرفتار کر لیا گیا ہے، پولیس کا کہنا ہے کہ گرفتار ملزم سے تفتیش جاری ہے۔