خواتین اور بچوں سے زیادتی کے کیسز سمیت،انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کی تحقیقات، چھان بین اور تمام ترتفتیشی پیش رفت پر عمل درآمد کیا جائے ۔

106

کراچی(اسٹاف رپورٹر)آئی جی سندھ ڈاکٹرسید کلیم امام کی زیرصدارت ایک اعلیٰ سطحی اجلاس میں خواتین اور بچوں سے زیادتی کے کیسز سمیت،انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں پرمشتمل مختلف نوعیت کے مقدمات اور انویسٹی گیشن کے امور پر تفصیلی کیس ٹوکیس میٹنگ ہوئی۔اس سلسلے میں سندھ حکومت کے قوانین،سندھ پولیس کی ایس او پی پر شرکاءکی بریفنگ اورتجاویز کی روشنی میں تفصیلی جائزہ لیا گیا اورمزید ضروری ہدایات دیں۔

آئی جی سندھ نے ہدایات دیں کہ خواتین اور بچوں سے زیادتی اور انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں سے متعلق دیگر مختلف مقدمات کی تحقیقات، چھان بین اور تمام ترتفتیشی پیش رفت پر عمل درآمد کو ھائی کورٹ کے عین “عدالتی احکامات” کے مطابق یقینی بنایا جائے ۔انہوں نے کہا کہ ایسے مقدمات میں درکار ڈی این اے ٹیسٹ کے حوالے سے جامعہ کراچی اور لیاقت یونیورسٹی جامشورو کے متعلقہ شعبہ جات سے مسلسل رابطوں کو بھی یقینی بنایا جائے ،جسکا مقصد ڈی این اے ٹیسٹ رپورٹس کو مقررہ مدت میں عدالتوں کو فراہم کرنا ہے ۔

پولیس کی دعوت پر ایڈیشنل سیکریٹری ہوم اورفنانس کے سینئر ا فسروں نے بھی میٹنگ مین شرکت کی -اجلاس میں ایڈیشنل آئی جیز، حیدرآباد،سکھر، کراچی نے متعلقہ رینج/زونزکے ڈی آئی جیز اور ضلعی ایس ایس پیز کے ہمراہ بھی ذریعہ ویڈیو لنک، جبکہ ایڈیشنل آئی جیز سی ٹی ڈی،آپریشنز، اسپیشل برانچ/ای اینڈ ٹی، ڈی آئی جیز،ہیڈ کوارٹرز، فائنانس، انویسٹی گیشن،آپریشنز سمیت اے آئی جیز فارنزکس،لیگل، لاجسٹکس/ایڈمن، آپریشنز،ویلفیئر/پی ایس او،اور ایس پی ہیومن رائٹس نے براہِ راست شرکت کی۔