بی جے پی کو دہلی انتخابات میں بدترین شکست

281

نئی دہلی: حکمراں جماعت بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کو عام آدمی پارٹی (اے اے پی) کے ہاتھوں عبرتناک شکست کا سامنا کرناپڑگیا۔

تفصیلات کے مطابق بھارت میں دہلی اسمبلی کے انتخابات میں عام آدمی پارٹی نے مودی کی جماعت بھارتیہ جنتا پارٹی کو تیسری بار بھی شکست کا مزہ چکھا دیا۔نئی دہلی کی اسمبلی کے انتخابات کے غیر حتمی اور غیر سرکاری ابتدائی نتائج کے تحت دہلی کی حکمراں جماعت عام آدمی پارٹی نے 70 میں سے 58 نشستیں حاصل کر کے میدان مار لیا اور مودی سرکار کے غرور کو دھول چٹا دی ہے۔ ملک کی حکمراں جماعت بی جے پی ایڑی چوٹی کا زور لگانے کے باوجود صرف 9 نشستیں حاصل کر پائی۔

دہلی میں حکومت سازی کیلئےسادہ اکثریت حاصل کرنے کے لیے 36 سیٹیں درکار ہوتی ہیں  جبکہ عام آدمی پارٹی نے 58 سیٹیں حاصل کر کے تیسری بار حکومت سازی کی پوزیشن میں آگئی ہے۔ عام آدمی پارٹی کے کارکنان نے جیت کی خوشیاں میں مٹھائیاں بانٹیں جبکہ بی جے پی کے دفاتر میں سناٹاہے۔

بھارتی تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ بی جے پی کی انتخابات میں بڑی شکست کی وجہ متنازع شہریت بل ہے جسے مسلمانوں سمیت ملک کے سنجیدہ حلقوں نے مسترد کردیا تھا۔

دہلی کی سیاسی بساط کو الٹنے کیلئے بی جے پی حکومت کے صدر اور وزیر داخلہ امیت شاہ، وزیر اعلیٰ اتر پردیش یوگی سمیت کئی اعلیٰ عہدیداروں نے انتخابی حلقوں میں ڈیرے ڈال دیئے تھے اور حکومتی وسائل کا بے دریغ استعمال کیا گیا تھا جبکہ ہندو ووٹرز کو لبھانے کیلئے اقلیتوں کیخلاف زہر اگلا گیا اور نفرت کی فضا پیدا کی تاہم تمام تر کوششوں کے باوجود ووٹرز نے مودی سرکار کی پالیسیوں کو ٹھکرا دیا۔

واضح رہے کہ  عام آدمی پارٹی کے اروند کیجروال نے مودی کی جماعت کی بی جے پی کو تیسری بار شکست کا مزہ چکھایا ہے ۔