10 بجے تک نہ آنے والے افسران کو فارغ کیا جائے، سید مرادعلی شاہ

265

کراچی(اسٹا ف رپورٹر)وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے محکمہ داخلہ، بلدیات، زراعت اور تعلیم سمیت مختلف وزارتو ں کا اچانک دورہ کیا، افسران اورملازمین کی غیر حاضری پر اظہار برہمی کرتے ہوئے سیکریٹریٹ کے تمام افسران کی حاضری کا ریکارڈ طلب کرلیا اور کہا 10بجے تک افسر نہیں آتے توفارغ کریں،

تفصیلات کے مطابق وزیر اعلیٰ سندھ مرادعلی شاہ نے محکمہ داخلہ کے دفترپر چھاپہ مارا تو سیکرٹری سمیت تمام افسران غائب تھے، جس پر مراد علی شاہ نے افسران کی غیر حاضری پربرہمی کااظہار کیا،

وزیر اعلیٰ سندھ مرادعلی شاہ نے محکمہ زراعت کے دفتر پر بھی چھاپہ مارا اور کہا عملہ موجود نہیں،کام نہیں کر رہے ہیں تو فارغ کریں، جو افسر 10بجے تک نہیں آتے توفارغ کریں،

بعد ازاں وزیراعلیٰ سندھ مرادعلی شاہ محکمہ محنت کے دفتر پہنچے، جہاں وزیراعلیٰ سندھ مختلف دفاترکے دروازے کھول کر افسران کی موجودگی کاجائزہ لیا اور سیکرٹری سے سوال کیا آپ تولاڑکانہ گئے تھے، اچانک آگئے ہیں۔

مرادعلی شاہ نے سیکرٹری بلدیات کے دفتر پر بھی چھاپہ مارا، جہاں محکمہ بلدیات کے سیکرٹری روشن علی شیخ بھی غیرحاضر تھے،

وزیراعلیٰ کے پوچھنے پر عملے نے جواب دیا کہ سیکرٹری، چیف سیکرٹری کی میٹنگ میں گئے ہیں، عملے کے جواب پر وزیراعلیٰ سندھ نے چیف سیکرٹری آفس سے رابطہ کیا تو پتہ چلا کوئی میٹنگ نہیں ہے،

وزیراعلیٰ سندھ نے شدیدناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے کہا یہ عمل ناقابل برداشت ہے، جھوٹ سے کام نہیں چلے گا،وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ شدیدناراض ہو گئے،

ترجمان وزیراعلیٰ سندھ کا کہنا تھا کہ وزیراعلیٰ سندھ سیدمراد علی شاہ نے ہردفتر کا دورہ کیا، افسران کی دوڑیں لگی ہوئی ہیں، مراد علی شاہ اپنے آفس ساتویں فلورپرپہنچے تو نیوسیکریٹریٹ میں بھی افسران غائب تھے، مراد علی شاہ نے کہا اب میں سرپرائز دورے کرتا رہوں گا۔