سپریم کورٹ نے ایف آئی اے کو بی آر ٹی منصوبے کی تحقیقات سے روک دیا

345

اسلام آباد: سپریم کورٹ آف پاکستان نے ایف آئی اے کو پشاور بس ریپڈ ٹرانزٹ (بی آر ٹی) منصوبے کی تحقیقات سے روک دیا۔

جسٹس عمرعطا بندیال کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے 3 رکنی بینچ نے بس ریپڈ ٹرانزٹ (بی آر ٹی) کیس کی سماعت کی۔

عدالت نے بی آر ٹی منصوبے کی مجموعی لاگت اور تکمیل کی تفصیلات طلب کر تے ہوئے استفسار کیا کہ بی آر ٹی منصوبے کی ابتدائی لاگت کتنی تھی ؟ تکمیل کی ابتدائی تاریخ کیا تھی، منصوبہ کب مکمل ہوگا بتایا جائے۔

یہ بھی پڑھیں: بی آر ٹی پشاور منصوبے کی تحقیقات ایف ائی آے نے شروع کر دیں

کے پی حکومت کے وکیل نے بتایا کہ 31 جولائی 2020 تک بی آر ٹی پشاور منصوبہ مکمل ہو جائے گا، بی آر ٹی منصوبے پر 2018 میں کام شروع ہوا جبکہ بی آر ٹی کا ڈیزائن بھی کئی بار تبدیل ہوا، پشاور ہائیکورٹ کا فیصلہ بغیر وجوہات کے جاری کیا گیا۔

بعد ازاں سپریم کورٹ نے ایف آئی اے کو بی آر ٹی کی تحقیقات سے روکتے ہوئے کیس کی سماعت غیر معینہ مدت تک ملتوی کردی۔

یاد رہے کہ پشاور ہائی کورٹ نے ایف آئی اے کو 45 دن میں پشاور میٹرو بس منصوبے کی تحقیقات کا حکم دیا تھا،ہائی کورٹ کے فیصلے کے بعد خیبر پختونخوا حکومت نے سپریم کورٹ میں درخواست دائر کی ہے۔