صدر کے علاقے جہانگیر پارک سے برقع پوش خاتون اور معمر شخص نے معصوم بچے کو اغوا کیا

386

کراچی (اسٹاف رپورٹر ) شہر قائد کے مشہور جہانگیر پارک سے برقع پوش خاتون نے ڈیڑھ سالہ بچے کو دیدہ دلیری سے اغواءکر لیا۔تفصیلات کے مطابق کراچی میں بچوں کے اغواءکی وارداتوں کی روک تھام نہ کی جا سکی، صدر میں واقع جہانگیر پارک سے ڈیڑھ سالہ بچہ محمد سدیس کو اغواءکر لیا گیا، واردات کی ایف آئی آر پریڈی تھانے میں درج کر دی گئی ،

بچے کے والد عامر کے مطابق ان کی کسی سے دشمنی اور نہ کوئی لین دین کا تنازعہ ہے، پارک کے سی سی ٹی وی کیمرے میں برقع پوش خاتون اور ایک ضعیف العمر شخص کو بچے کو لے جاتے دیکھا جا سکتا ہے،پولیس کے مطابق ڈیڑھ سالہ سدیس والدین کے ساتھ جہانگیر پارک آیا تھا، کچھ دیر بعد وہ بھیڑ میں کھو گیا، تاہم جب پارک کے سی سی ٹی وی کیمرے میں دیکھا گیا تو معلوم ہوا کہ بچہ اغواءکیا گیا ہے، کیمرے میں اغوا ءکی واردات ریکارڈ ہو گئی تھی ،ویڈیو میں دیکھا گیا کہ برقع پوش خاتون بچے کو اغواءکر کے لے جا رہی ہے، ملزمہ کے ساتھ 2 افراد اور بھی واردات میں شامل تھے، بچے کے والد نے پولیس کو بیان دیا کہ وہ موبائل مارکیٹ میں موبائل کا کام کرتا ہے،

گزشتہ روز تفریح کے لیے اپنی فیملی کے ساتھ شام 7 بجے جہانگیر پارک میں داخل ہوئے تھے، اور پھر تقریباً 25 منٹ بعد وہ کھو گیا،والد کے بیان کے مطابق بچے نے نیلی جینز اور چیک کی شرٹ اور سفید جوتے پہن رکھے تھے، پارک میں انھوں نے بچے کو دیر تک ڈھونڈا لیکن نہیں ملا، جس کے بعد انھوں نے پارک کے سی سی ٹی وی کیمرے کو چیک کیا تو معلوم ہوا کہ وہ اغواءکر لیا گیا ہے۔رنچھوڑ لائن کے رہائشی بچے کے والد محمد عامر نے بتایا کہ عورت اکیلی نہیں تھی، اس کے ساتھ پچاس پچپن سالہ ایک مرد بھی تھا جس کے سر اور داڑھی کے بال سفید تھے، اور اس نے کالی قمیض اور سفید شلوار پہنچ رکھی تھی، برقع والی عورت کے ساتھ ایک لڑکا بھی تھا جس نے پیلی شرٹ اور کالی پینٹ پہن رکھی تھی۔

واقعے کا مقدمہ مغوی بچے کے والد عامر کی مدعیت میں پریڈی تھانے میں درج کیا گیا تھا۔تاہم تفتیشی پولیس کا کہنا ہے کہ سی سی ٹی وی فوٹیج کی مدد سے بچے کی تلاش شروع کی جارہی ہے۔