برطانیہ اور فرانس نے ووہان سے شہری نکال لئے

371
مارسلے (فرانس): ووہان سے وطن واپس لائے گئے شہریوں کو آبادی سے دور پہنچایا جارہا ہے

بیجنگ (انٹرنیشنل ڈیسک) چین میں پھیلنے والے کورونا وائرس کے باعث برطانیہ اور فرانس نے بھی اپنے شہریوں کو ووہان سے نکال لیا ہے۔ کورونا وائرس کی وجہ سے امریکا، جاپان اور جنوبی کوریا پہلے ہی اپنے شہریوں کو چین سے نکال چکے ہیں، جب کہ آسٹریلیا، انڈونیشیا اور ملائیشیا اپنے شہریوں کو چین سے نکالنے کی تیاری کررہے ہیں۔ دوسری جانب ترکی اور کینیا کی ائرلائنز نے چین کے لیے اپنی پروازیں منسوخ کردی ہیں۔ جرمنی بھی اپنے 100 شہریوں کو ووہان سے نکالنے کے لیے جمعہ کے روز طیارہ بھیج چکا ہے۔ چین سے آنیوالے جرمن شہریوں کو 2 ہفتوں کیلیے الگ ایک فوجی بیس میں رکھا جائے گا۔ ووہان میں پھنسے شہریوں کو نکالنے کیلیے بھارتی طیارہ بھی روانہ ہوگیا ہے۔ سنگاپور نے چین کے کسی بھی حصے سے آنے والوں کے داخلے پر پابندی کا اعلان کر دیا ہے۔ دوسری جانب جنوبی کوریا میں کورونا وائرس سے متاثرہ مریضوں کی تعداد 11 ہوگئی ہے۔ ماہرین نے خدشہ ظاہر کیا ہے کہ کورونا وائرس کی وبا چین کے دیگر شہروں میں اپریل یا مئی تک مزید پھیلے گی۔ ماہرین کے مطابق جون اور جولائی میں وائرس میں کمی آنا شروع ہوگی۔ اس کے علاوہ دنیا بھرمیں کورونا وائرس کا خوف برقرار ہے۔ چین میں ہلاکتوں کی تعداد 213 ہوگئی ہے، جب کہ متاثرین کی تعداد 10ہزار سے تجاوز کر گئی ہے۔ کورونا وائرس پر جمعرات کے روز ہونے والے پہلے اجلاس میں عالمی ادارہ صحت کورونا وائرس کو عالمی ایمرجنسی قرار دے چکا ہے۔ جب کہ امریکا نے اپنے شہریوں کو چین کا سفر کرنے سے روک دیا ہے۔ امریکی محکمہ خارجہ نے چین کا سفر کرنے والوں کے لیے ریڈ الرٹ یا لیول 4 ایڈوائزری جاری کردی۔