محکمہ کسٹم نے چین سے درآمد ہونے والے کنسائن منٹس کی فیومیگیشن لازمی قرار،

418

کراچی(اسٹاف رپورٹر)پاکستان کسٹمز نے کرونا وائرس کے خطرات کے پیش نظر چین سے سمندری راستوں کے ذریعے درآمد ہونے والے کنسائن منٹس کی فیومیگیشن کے بغیر کلئیرنس روک دی ہے۔اس ضمن میںچیف کلکٹرکسٹمز واصف علی میمن نے بتایاکہ بندرگاہوں پر چین سے درآمد ہونے والے کنسائن منٹس کی نگرانی اور جانچ پڑتال بھی سخت کردی گئی۔

واضع رہے وزارت بندرگاہ جہاز رانی اور پورٹ ہیلتھ اسٹیبلشمنٹ کی جانب سے محکمہ کسٹمز اور پورٹ اتھارٹیز کو الرٹ جاری کیے گئے ہیں جس کے تحت چین سے درآمدہونے والے کنسائن منٹس کی کلئیرنس کوفیومیگیشن سے مشروط کردی گئی ہے۔وفاقی ادارے پورٹ ہیلتھ اسٹبلشمنٹ نے محکمہ کسٹمزکو ہدایت کی ہے کہ وہ گذشتہ16دنوں میں چین سے درآمد ہونے والے پرندوں اور مویشیوں کے فیومیگیشن کے بغیر کنسائن منٹس کی کلیئرنس میں احتیاط کرے۔ کرونا وائرس نے چین میں انسانی زندگیوں کوخطرناک حدتک متاثرکیاہے جہاں 100سے زائداموات ہوئی ہیں۔

چین سے درآمدہ کنسائن منٹس کی کلیئرنس روکنے کا مقصدپاکستانیوں کوکرونا وائرس سے بچاناہے۔کرونا وائرس کے ممکنہ پھیلاﺅ کے پیش نظروزارت بحری امور کی جانب سے جاری کردہ الرٹ میں ایف آئی اے امیگریشن کو بھی احکامات جاری کئے گئے ہیں جس میں ہدایت کی گئی ہے کہ تمام بحری جہاز بالخصوص چین سے آنے والے بحری جہازوں کو گوادر کراچی پورٹ اور پورٹ قاسم پر لنگر انداز ہونے والے جہازوں کے عملے کو شور لیف shore pass پاس جاری نہ کیے جائیں۔

ہدایات میں کہاگیا ہے کہ بحری جہازوں کے عملے کو جہاز کے اندر ہی محدود رکھاجائے کیونکہ شور لیف پاس جاری ہونے سے بحری جہاز کے عملے کو شہرمیں جانے کی اجازت ہوتی ہے۔ یہ احکامات کے پی ٹی،پورٹ قاسم اور گوادر پورٹ کے سربراہوں کو جاری کیے گئے ہیں۔