رہائشی عمارتوں پر قائم میرج ہالز کو ختم کیا جائے،کمشنر کراچی

249

کراچی(اسٹاف رپورٹر)مخدوش عمارتوں سے متعلق سپریم کورٹ کے احکاما ت پر عملدرآمد کے اقدامات کا جائزہ لینے کے لئے کمشنر کراچی افتخار شالوانی کی صدار ت میں ایک جائزہ اجلاس منعقدہوا،

جس میں فیصلہ کیا گیا کہ کراچی میں مخدوش عمارتوں کو خالی کرانے کے اقدامات کو یقینی بنانے کے لئے ایس بی سی اے موثر کارروائی کرے گی اگر کسی عمارت کے گرنے سے کوئی نقصان ہو ا تو اس کی ذمہ داری ایس بی سی اے کے متعلقہ افسرپر عاید ہو گی ڈائریکٹر آشکار داور نے کمشنر کراچی کو مخدوش عمارتون اور غیر قانونی میرج ہالز کے خلاف کارروائی سے متعلق بریفنگ دی،

فیصلہ کیا گیا کہ رہائشی پلاٹوں پر قائم میرج ہالز کے خلاف کارروائی کی جائے گی اور انھیں بند کیا جائے گا۔ ضلعی انتظامیہ، بلڈنگز کنڑول اتھارٹی سمیت متعلقہ افسران مربوط کارروائی کریں گے۔ کمشنر کو بتایا گیا کہ کراچی میں 382مخدوش عمارتیں قائم ہیں۔ مجموعی طور پر 382 مخدوش عمارتیں ہیں جن میں 303 ضلع جنوبی، 14 ضلع شرقی،دس ضلع غربی میں ہیں،

ایس بی سی اے نے مخدوش عمارتوں کے مالکان کو عمارت خالی کرنے کے نوٹسز جاری کر دیے ہیں۔ وہ خالی کرنے سے گریز کررہے ہیں اجلا س نے مخدوش عمارتوں کے یوٹیلٹی کنکنشز منقطع کرنے پر غور اورفیصلہ کیا گیا کہ یوٹیلیٹی اداروں کے ساتھ اجلاس ہوگا جس میں انھیں پابند کیا جائے گا کہ وہ ان عمارتوں کے کنکشنز منقطع کریں تاکہ مستقبل میں مخدوش عمارت کے گرنے کی صورت میں کسی بھی نقصان سے بچا جا سکے،

اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ رہائشی عمارتوں پر قائم میرج ہالز کو ختم کی جائے گا۔اجلاس میں شہر مین غیرقانونی میرج ہالز کی صورتحال کا جائیزہ لیا گیا۔ ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر کورنگی نے بتا یا کہ کورنگی میں 45 میرج ہالز رہائشی پلاٹوں پر قائم ہیں،

ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر کورنگی نے غیر قانونی میرج ہالز کی تفصیلات سے آگاہ کیا اجلاس میں ڈپٹی کمشنر جنوبی ارشاد علی، ایڈیشنل ڈپٹی کمشنرز، ایس بی سی اے،کے ڈی اے،ضلعی بلدیات، کنٹونمنٹ بورڈ کے افسران نے شرکت کی۔