تجارتی خسارہ کم اور زرمبادلہ کے ذخائر بڑھ رہے ہیں‘ روپیہ مستحکم ہوگیا‘ مشیرخزانہ

74
اسلام آباد، مشیر خزانہ عبدالحفیظ شیخ چیئرمین ایف بی آر شبر زیدی و دیگر کے ساتھ مشترکہ پریس کانفرنس کررہے ہیں
اسلام آباد، مشیر خزانہ عبدالحفیظ شیخ چیئرمین ایف بی آر شبر زیدی و دیگر کے ساتھ مشترکہ پریس کانفرنس کررہے ہیں

اسلام آباد( نمائندہ جسارت) وزیراعظم کے مشیر برائے خزانہ عبدالحفیظ شیخ نے دعویٰ کیا ہے کہ تجارتی خسارہ کم اور زرمبادلہ کے ذخائر بڑھ رہے ہیں ، روپیہ بھی مستحکم ہوگیا ہے۔ اسلام آباد میں وفاقی وزیر حماد اظہر اور معاون خصوصی اطلاعات فردوس عاشق اعوان کے ساتھ پریس کانفرنس کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ گزشتہ 4ماہ کے دوران ماضی کی حکومتوں کا2.1 ارب ڈالر کا قرض بھی ادا کردیا۔عبدالحفیظ شیخ کا کہنا تھا کہ بہتر پالیسیوں کے باعث ملک کا معاشی نظام استحکام کی طرف گامزن ہے جس کی گواہی آئی ایم ایف نے دی ہے۔مشیر خزانہ نے کہا کہ ٹیکس محصولات میں 21 فیصد اضافہ ہوا ہے، ملک کے تجارتی خسارے میں بتدریج کمی ہورہی ہے اور زرمبادلہ کے ذخائر میں اضافہ ہورہا ہے۔ان کا کہنا تھا کہ سیمنٹ کی پیداوارمیں ساڑھے 4 فیصد اضافہ ہوا ہے اور ایک کروڑ 60 لاکھ ٹن سے زیادہ پیداوار ہوئی ہے جس سے یہ ظاہر ہوتا ہے کہ ملک میں تعمیراتی سرگرمیاں بھی بڑھی ہیں۔انہوں نے کہا کہ ‘ایکسچینج ریٹ مستحکم سطح پر برقرار ہے بلکہ اس میں تھوڑی بہتری آئی ہے، اسٹاک مارکیٹ کئی ہفتوں سے سے اچھی رفتار سے اوپر جارہی ہے اور جولائی سے اب تک تقریباً 6 فیصد اضافہ ہوا ہے۔عبدالحفیظ شیخ کا کہنا تھا کہ پچھلے 4ماہ میں اسٹیٹ بینک سے ایک ٹکا بھی ادھار نہیں لیا گیا، یہ تمام چیزیں ملا کر دیکھیں تو ایک اچھی تصویر ابھر رہی ہے۔انہوں نے کہا کہ ملکی برآمدات میں بھی نمایاں بہتری آئی اور چار فیصد اضافہ ہوا ہے اسی طرح مجموعی قومی خسارے میں بھی نمایاں کمی ہوئی ہے۔مشیر خزانہ نے کہا کہ نیاپاکستان ہاؤسنگ اسکیم کے لیے30ارب روپے اضافی مختص کررہے ہیں، اسکیم کے تحت 300 ارب کے گھر بنیں گے اور اس میں حکومت کا حصہ 30 ارب ہوگا اور اس میں سرگرمی میں حصہ لینے والوں کے لیے ٹیکس میں خصوصی ریٹ رکھا جائے گا۔انہوں نے مزید کہا کہ حکومت کے موثر اقدامات سے ملکی معیشت کو سنبھالا ملا ہے اور برآمدات کے فروغ کے لیے برآمدکنندگان کو 200 ارب روپے اضافی دیے جائیں گے اور قرضے کی مد میں 100ارب روپے مزید رکھے گئے ہیں۔