پنجاب کابینہ نے لوکل گورنمنٹ ایکٹ 2019ء میں ترامیم کی منظوری دی

24

 

لاہور (نمائندہ جسارت) وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار کی زیرصدارت وزیراعلیٰ آفس میں صوبائی کابینہ کا 20 واں اجلاس منعقد ہوا جس میں پنجاب لوکل گورنمنٹ ایکٹ 2019ء میں ترامیم کی منظوری دی گئی۔ ان ترامیم کے تحت سیاسی جماعت یا انتخابی پینل بنا کر بلدیاتی الیکشن میں حصہ لینے کی اجازت ہوگی اور اقلیتوں کو مخصوص نشستوں کے ساتھ جنرل نشستوں پر بھی ووٹنگ کا حق حاصل ہوگا جبکہ انتخابی نتائج کا اعلان ریٹرننگ آفیسر کرے گا اور شکایت کی صورت میں الیکشن ٹربیونل الیکشن ایکٹ کے تحت فیصلے کرے گا۔ کابینہ اجلاس میں لاہور اور آذر بائیجان کے شہر ناک چیوان کو جڑواں شہر قرار دینے کا فیصلہ کیا گیا اور کابینہ نے اس ضمن میں مفاہمت کی یادداشت پر دستخط کی منظوری دے دی۔اجلاس میں ڈیرہ غازی خان میں سائوتھ پنجاب انسٹی ٹیوٹ آف سائنس اینڈ
ٹیکنالوجی کے قیام کی منظوری دی گئی۔اجلاس میں پنجاب ولیج پنچایت اینڈ نیبرہڈ کونسلز ایکٹ 2019ء میں ترامیم کی بھی منظوری دی گئی جبکہ پنجاب ڈی مارکیشن آف لوکل ایریاز رولز 2019 کے تحت مقامی علاقوں کی حدبندی کی منظوری دی گئی۔ پنجاب لوکل گورنمنٹ ایکٹ 2019ء کے تحت سکسیڈنگ لوکل گورنمنٹس کے قیام کی منظوری دی گئی۔ پنجاب بھر میں 455 مقامی حکومتیں بنیں گی۔ اجلاس میں پنجاب میونسپل سروسز پروگرام میں رد و بدل کا فیصلہ کیا گیا اور کابینہ نے پنجاب میونسپل سروسز پروگرام میں رد و بدل کی منظوری دی۔ اس پروگرام کے تحت سڑکوں کی تعمیر و مرمت کی اسکیموں پر مقامی حکومتیں عملدرآمد کرائیں گی۔ صوبائی کابینہ کے اجلاس میں شاہی قلعہ اور اس کے بفر زون میں سیاحت کے فروغ کے لیے ہیریٹج اینڈ اربن ری جنریشن پروگرام کی منظوری دی گئی۔ شاہی قلعہ میں خلوت خانہ اور دیگر حصوں کو بحال کیا جائے گا۔شاہی قلعہ کے اطراف میں بجلی کے بے ہنگم تار ہٹا دیے جائیں گے اور شاہی قلعہ کے اطراف میں واقع علاقوں کی تاریخی حیثیت کو بحال کیا جائے گا۔ شاہی قلعہ میں فورٹ میوزیم بنایا جائے گا۔اس منصوبے پر عملدرآمد کیلئے فرنچ ڈویلپمنٹ ایجنسی سے 25.8 ملین ڈالر سافٹ لون حاصل کیا جائے گا۔ صوبائی کابینہ کے اجلاس میں صوبائی وزیر اقلیتی امور و انسانی حقوق اعجاز عالم نے بلدیاتی انتخابات میں اقلیتوں کو جنرل نشستوں پر ووٹنگ کا حق دینے کے فیصلے کا خیرمقدم کرتے ہوئے کہا کہ وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے اقلیتوں کو دہری ووٹنگ کا حق دے کر دل جیت لیے ہیں اور پنجاب حکومت نے اقلیتوں کا دیرینہ مطالبہ پورا کیا ہے۔
پنجاب کابینہ