ڈیرہ اسماعیل خان، مسلح افراد کی فائرنگ ، ایف سی اہلکاروں سمیت 3جاں بحق

39

ڈی آئی خان (آن لائن) ڈیرہ اسماعیل کے علاقے کلاچی باچا آباد کے قریب دہشت گردوں کا سیکورٹی اہلکاروں پر حملہ، 2 اہلکار شہید اور 3 شہری زخمی ہوگئے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق حملے کی اطلاع ملتے ہی سیکورٹی فورسز اور امدادی ٹیمیں جائے وقوعہ پر پہنچ گئیں، میتوں اور زخمیوں کو ڈسٹرکٹ اسپتال منتقل کردیا گیا ہے، فورسز نے علاقے کی ناکہ بندی کردی اور دہشت گردوں کی تلاش کیلیے آپریشن تیز کردیا ہے۔ دوسری جانب وفاقی وزارت داخلہ نے بھی سربراہ جے یوآئی ف مولانا فضل الرحمان کے آزادی مارچ سے متعلق تھریٹ الرٹ جاری کیا تھا کہ مولانا فضل الرحمان پر دہشت گرد حملہ ہوسکتا ہے۔ حملے کیلیے بارود سے بھری گاڑی استعمال ہوسکتی ہے جبکہ فضل الرحمان کی سیکورٹی بڑھانے کی سفارش کی گئی ہے۔ وزارت داخلہ نے پنجاب، خیبر پختونخوا اور اسلام آباد کے ہوم سیکرٹریز اورآئی جیز کو بھی آگاہ کردیا تھا۔ واضح رہے ڈیرہ اسماعیل خان بھی جمعیت علما اسلام(ف) کا سیاسی گڑھ ہے۔ جہاں مولانا فضل الرحمان کی جماعت کی بیحد مقبولیت ہے لیکن اس کے باوجود مولانا فضل الرحمان الیکشن میں اپنی پکی نشستیں گنوا بیٹھے۔ مولانا فضل الرحمان نے الیکشن میں دھاندلی کا الزام عاید کیا اور بالآخر دوسری جماعتوں کو بھی حکومت کے خلاف ایک پلیٹ فورم پر اکٹھا کرنے میں کامیاب ہوگئے۔ جس کے نتیجے میں اپوزیشن کی 9 اپوزیشن جماعتوں نے رہبر کمیٹی تشکیل دی اور رہبر کمیٹی کے متفقہ فیصلے کی روشنی میں آزادی مارچ کیا گیا۔