خورشید شاہ کی ایمبولینس کے ذریعے عدالت میں پیشی، ریمانڈ میں 5 روز کی توسیع

38

سکھر (اے پی پی) سکھر کی عدالت نے خورشید شاہ کے ریمانڈ میں 5 روز کی توسیع کردی، پاکستان پیپلز پارٹی کے مرکزی رہنما سید خورشید احمد شاہ کا 14روزہ ریمانڈ مکمل ہونے پر انہیں پیر کو نیب کی ٹیم نے احتساب عدالت کے جج امیر علی مہیسر کے چھٹی پر ہونے کے باعث ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج سید شرف الدین شاہ کی عدالت میں پیش کیا۔ قبل ازیں خورشید شاہ کو لائے بغیر نیب ٹیم نے عدالت سے مزید ریمانڈ کی استدعا کی تاہم جج کے پر نیب کی ٹیم فوری طور پر خورشید شاہ کو ایمبولینس میں عدالت لے آئی، خورشید شاہ وہیل چیئر پر عدالت میں پیش ہوئے۔ اس موقع پر جج شرف الدین شاہ نے خورشید شاہ سے پوچھا کہ انہیں کوئی پریشانی تو نہیں ہے جس پر خورشید شاہ نے ان کی بات کا سر ہلاکر نہ میں جواب دیا سماعت کے موقع پر خورشید شاہ کے میڈیکل بورڈ کی جانب سے ان کی میڈیکل رپورٹ بھی عدالت میں پیش کی گئی جس میں بتایا گیا ہے کہ خورشید شاہ عارضہ قلب میں مبتلا ہیں ان کے دل کے 3 وال بند ہیں شریانیں بھی متاثر ہیں ان کو انجیو گرافی کے بعد 7 روز تک آبزرویشن میں رکھا گیا ہے۔ بعد ازاں اگر طبیعت بہتر نہ ہوئی تو اینجوپلاسٹی یا بائی پاس سرجری کا فیصلہ کیا جائے گا۔ سماعت کے دوران ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج نے خورشید شاہ کا مزید 5روز کا ریمانڈ دیتے ہوئے نیب کو انہیں دوبارہ 9 نومبر کو عدالت میں پیش کرنے کا حکم دیا۔