ممتاز شاعر اعجاز رحمانی انتقال کر گئے ، نیوکراچی میں تدفین

325

کراچی (اسٹاف رپورٹر)ممتا ز نعت گوشاعر اعجاز رحمانی ہفتہ کو 83سال کی عمر میں انتقال کر گئے ۔ مرحوم کی نماز جنازہ جامع مسجد اکبری ،مدرسہ یاسین القرآن ، سیکٹر 5ایم نیو کراچی میں ادا کی گئی۔ نیو کراچی سائٹ ایریا کے قبرستان میں تدفین عمل میں آئی ۔نماز جنازہ میں جماعت اسلامی سندھ کے امیر محمد حسین محنتی، ناظم تنظیم محمد مسلم ، کراچی کے نائب امرابرجیس احمد، ڈاکٹراسامہ رضی ، ڈپٹی سیکرٹری عبد الرزاق خان،ضلع شمالی کے امیر محمد یوسف ، ضلع گلبرگ کے امیر فارو ق نعمت اللہ ، ضلع غر بی کے امیر محمد اسحق خان، سیکرٹری اطلاعات زاہد عسکری،جمعیت اتحاد العلماکے ناظم اعلیٰ مولانا عبد الوحید، الخدمت کے عنایت اللہ اسماعیل ، حلقہ علم و ادب سے وابستہ شخصیات سرور جاوید،نورالدین نور،نظر فاطمی،شکیل احمد خان،رضوان صدیقی، مظہر ہانی، زاہد علی سید، راشد عزیز، اویس ادیب انصاری سمیت اہل محلہ عزیزواقارب اوردیگر نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔ علاوہ ازیں امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن ،نائب امرا ڈاکٹر واسع شاکر ، مسلم پرویز ، راجہ عارف سلطان ،سیکرٹری کراچی عبد الوہاب ،ڈپٹی سیکرٹری راشد قریشی ، عبد الواحد شیخ ، یونس بارائی ، انجینئر عبد العزیزاور دیگر نے اعجاز رحمانی کے انتقال پر انتہائی دکھ اور افسوس کا اظہار کرتے ہوئے مرحوم کے لیے مغفرت اور لواحقین کے لیے صبر جمیل کی دعا کی ۔حافظ نعیم الرحمن نے کہا کہ اعجاز رحمانی اپنی نعت گوشاعری کی وجہ سے علم وادب کے حلقوں اور مشاعروں میں بہت نمایاں مقام رکھتے تھے ۔ ان کے کئی مجموعہ کلام بھی شائع ہوچکے ہیں ۔ ان کی ادبی خدمات ہمیشہ یاد رکھی جائیں گے۔