سندھ سے ناانصافی کرنیو الے وزیراعظم وزیراعلیٰ سے آنکھ نہیں ملاسکتے‘ سعید غنی

41

کراچی ( اسٹاف رپورٹر)وزیر اطلاعات و محنت سندھ سعید غنی نے کہا ہے کہ سندھ سے ناانصافی کرنے والے وزیر اعظم وزیر اعلیٰ سے آنکھ نہیں ملاسکتے،عمران خان کی آمد پر مراد علی شاہ کو شیڈول سے آگاہ نہیں کیا جاتا، کراچی کو برباد کرنے والے آج بھی وفاقی حکومت کا حصہ ہیں۔ کراچی پریس کلب کے پروگرام میٹ دی پریس سے خطاب اور کلب کی گورننگ باڈی کے اراکین سے ملاقات کے دوران بات چیت کرتے ہوئے سعید غنی نے کہا کہ وزیر اعظم کو لینے نہ جانے کی بات درست نہیں ہے وزیر اعظم تو آئے ہی بہت کم ہیں اور وزیر اعظم کے شیڈول سے صوبائی حکومت کو آگاہ کیا جاتا ہے لیکن اتنی زحمت نہیں کی گئی کہ وزیراعلیٰ سندھ کو بھی آگاہ کر دیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ چاہے ہمیں ایک دوسرے کی شکلیں پسند ہوں نہ ہوں لیکن یہ دونوں آئینی عہدے ہیں اور دونوں کی آئینی ذمے داریاں ہیں، اگر وزیر اعظم وزیراعلیٰ سے ملاقات نہیں کرتے تو اس میں سندھ حکومت ذمے دار نہیں اپنی غیر تسلی بخش کار کردگی اور سندھ حکومت کے ساتھ وفاقی حکومت کی زیادتی کی وجہ سے وہ وزیر اعلیٰ سندھ سے آنکھ نہیں ملا سکتے اس وجہ سے سلیکٹڈ وزیر اعظم وزیر اعلیٰ سندھ سے نہیں ملے۔ انہوں نے کہا کہ وفاقی حکومت کی نالائقی اور ناکامی کی وجہ سے مڈل کلاس اور غریب لوگوں کے لیے مشکلات پیدا ہوگئی ہیں جو میڈیا کے ساتھ ہورہاہے محسوس ہوتا ہے کہ جان بوجھ کر کیا جارہا ہے ۔سعید غنی کا کہنا تھا کہ کراچی شہر کی پچھلی تاریخ کسی سے چھپی ہوئی نہیں ہے کراچی میں بے گناہ لوگوں کو مارا جاتا تھابلدیہ ٹاؤن کا واقعہ اور دیگر واقعات کا ذمے دار سندھ حکومت کو نہیں ٹھہرایا جاسکتا کراچی کی بربادی میں جن کا کردار ہے وہ آج بھی وفاقی حکومت میں بیٹھے ہیں، کراچی کے کچرے پر کوئی کچھ نہیں بولتا تھاہم نے کراچی کے بڑے بڑے ادارے جن پر کام کیا ہے اسکی کہیں مثال نہیں ملے گی، آئندہ دنوں میں300 ارب روپے سے زیادہ خرچ کرینگے اور مسائل حل کرینگے۔ وزیر اطلاعات نے کہا کہ کرا چی پریس کلب کی گرا نٹ کے حوالے سے بھی تما م اقدامات برو ئے کا ر لا ئے جا ئیں گے ، وزارت سنبھالنے کے بعد کراچی پریس کلب کا میرا پہلا دورہ ہے کچھ وجوہات کی بناء پر آنے میں تاخیر ہوئی ہے۔ صحافیوں کی رہائشی اسکیم کے لیے کوشش کررہے ہیں،تیسر ٹاؤن میں جو پلاٹس دیے گئے ہیں اسکا مسئلہ بھی حل کرنے کی کوشش کر رہے ۔انہوں نے مزید کہا کہ عمرا ن کی حکومت جنوری تک ہو گی کے نہیں وہ اس کی فکر کریں سندھ حکومت کہیں نہیں جا رہی۔ بلدیاتی الیکشن اگست 2020ء میں ہیں عدالت عظمیٰ پر یقین رکھتے ہیں وہ ضرورالیکشن کرائیں گی۔