آباد اور انٹر اسٹیٹ کے درمیان ” آؤ بنائیں سرسبز پاکستان مہم ” کے لیے یاداشت پر دستحط،

71

کراچی(اسٹاف رپورٹر)پاکستان میں بڑھتی ہوئی ماحولیاتی آلودگی پر قابو پانے کے لیے ایسوسی ایشن آف بلڈرز اینڈ ڈیولپرز (آباد) اور نجی کمپنی انٹر اسٹیٹ کے درمیان ” آؤ بنائیں سرسبز پاکستان مہم ” چلانے کے لیے مفاہمت کی یاداشت پر دستحط کردیے گئے ہیں۔تجارتی بنیادوں پر 3 سالہ معاہدے کے دوران ایک کروڑ پودے لگائے جائیں گے۔

نجی ہوٹل میں منعقدہ تقریب میں معاہدے پر آباد کے چیئرمین محسن شیخانی اور انٹراسٹیٹ کے صدر عامر خان نے دستحط کیے۔معاہدے کے مطابق پہلے مرحلے میں آباد ممبران کے تعمیراتی منصوبوں سمیت مختلف مقامات پر 40 ہزار پودے لگائے جائیں گے۔

انٹر اسٹیٹ،آباد کو تیارپودوں کی فراہمی کے ساتھ تشہیری مہم بھی چلائے گی جبکہ ان تیار پودوں کو آباد اپنے ممبران یا نیٹ ورک میں فروخت کرے گی۔اس موقع پر آباد کے چیئرمین محسن شیخانی نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ماحولیاتی آلودگی سے متاثر ہونے والے ملکوں میں پاکستان سرفہرست ہے،

عالمی ماحولیاتی اداروں کی تحقیقات کے مطابق کسی بھی ملک کے خشک رقبے کا 25 فیصدجنگلات پر مشتمل ہونا نہایت مناسب اور انسانی زندگی کی لیے انتہائی ضروری تصور کیا جاتا ہے۔عالمی بینک کے ترقیاتی اعداد وشمار کے مطابق پاکستان میں جنگلات 1.9 فیصد رہ گئے ہیں۔پاکستان زرعی ملک ہونے کے باوجود درختوں یا جنگلات کی اتنی زیادہ کمی ہمارے لیے باعث تعجب اور افسوس کا مقام ہے۔

انھوں نے کہا کہ آباد اور انٹر اسٹیٹ نے اپنی ذمے داری کا احساس کرتے ہوئے ” آؤ بنائیں سرسبز پاکستان” مہم چلانے کے لیے معاہدہ کیا ہے۔محسن شیخانی کا کہنا تھا کہ ” آؤ بنائیں سرسبز پاکستان مہم ” کو تجارتی بنیاد پر چلانے کا مقصد پودے لگانے والوں کو اونر شپ دینا ہے،

پاکستان میں کئی ادارے شجر کاری مہم چلارہے ہیں لیکن افسوس کہ پودے لگانے کے بعد اونر شپ نہ ہونے کے باعث ان پودوں کی دیکھ بھال نہ ہونے سے شجر کاری مہم کو کوئی فائدہ نہیں ہورہا۔ اس مہم کے تحت پودے لگانے والوں کو مالی فائدہ ہوگا جس سے پودوں کو اونرشپ ملے گی اور دیکھ بھال بھی ہوسکے گی۔

قبل ازیں انٹر اسٹیٹ کے صدر عامر خان نے ” آؤ بنائیں سرسبز پاکستان مہم” پر شرکا کو تفصیلی بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ پاکستان میں درختوں کے فوائد کے بارے میں آگاہی کی سخت ضرورت ہے۔

عامر خان کا کہنا تھا کہ اگر 5 کروڑ لوگوں کو درختوں کے فوائد سے آگاہی دی جائے تو سرسبز پاکستان کا خواب شرمندہ تعبیر ہوسکتا ہے۔وزیر اعظم عمران خان کو ملک کو ماحولیاتی آلودگی سے ہونے والے نقصانات کا ادراک ہے،10 ارب درخت لگانے کا منصوبہ قابل ستائش ہے۔

ضرورت اس امر کی ہے کہ ہم بحثیت عوام بھی درختوں کے اہمیت اجاگر کریں اور اپنے طور پر بھی شجر کاری کے لیے زیادہ سے زیادہ لوگوں کو شامل کریں۔آباد کے ساتھ انٹر اسٹیٹ کا معاہدہ بھی اسی سلسلے کی کڑی ہے۔