دل کے قریب پیچ کس پیوست ہونے والے بچے کا کامیاب آپریشن

138

کراچی (اسٹاف رپورٹر) قومی ادارہ برائے امراض قلب کے ڈاکٹروں نے پیچیدہ آپریشن کے ذریعے بچے کی زندگی بچالی، ڈیڑھ گھنٹے جاری رہنے والے آپریشن میں2 پیڈز کارڈک سرجنز سمیت 4 ڈاکٹروں نے حصہ لیا، 9 سالہ ارسلان سینے میں دل کے قریب پیچ کس گھسنے سے شدید زخمی ہوگیا تھا،
مختلف سرکاری اور پرائیویٹ اسپتالوں کے ڈاکٹروں نے ایسا خطرناک آپریشن کرنے سے معذرت کرلی تھی۔ تفصیلات کے مطابق قومی ادارہ برائے امراض قلب کے ماہرین نے 9 سالہ ارسلان کی زندگی بچالی، ارسلان کے والدین کے مطابق بچہ ماموں کے گھر میں رہتا ہے جہاں بچے اسکریو ڈرائیور سے کھیل رہے تھے کہ بھاگنے کے دوران اسکریو ڈرائیور ارسلان کے سینے میں پیوست ہوگیا۔ والدین کا کہنا تھا کہ وہ بچے کو لے کر عباسی شہید اسپتال، جناح اسپتال اور این آئی سی ایچ گئے جنہوں نے بچے کے آپریشن سے معذرت کر لی جس کے بعد بچے کو قومی ادارہ برائے امراض قلب لایا گیا جہاں پیڈیاٹرک کارڈیالوجسٹ ڈاکٹر عبدالستار نے بچے کا معائنہ کیا اور فوری آپریشن تجویز کیا۔ ڈاکٹر عبدالستار کے مطابق ارسلان کا آپریشن ڈیڑھ گھنٹے تک جاری رہا جس میں پیڈیاٹرک کارڈک سرجنز ڈاکٹر سہیل بنگش، ڈاکٹر اقبال اور پیڈیاٹرک کارڈیالوجسٹ ڈاکٹر نجمہ پٹیل نے حصہ لیا۔ ڈاکٹر عبدالستار نے بتایا کہ یہ ایک پیچیدہ آپریشن تھا کیوں کہ سینے میں جس جگہ بچے کوپیچ کس لگا تھا وہاں دماغ اور دل کی وینز ہوتی ہیں تاہم ہمارے سرجنز نے انتہائی مہارت سے بچے کا آپریشن کیا اوراس کی زندگی بچائی، بچہ اب صحت یاب اور آئی سی یو میں موجود ہے اور اس کی زندگی خطرے سے باہر ہے، اگر اس آپریشن میں تاخیر کی جاتی تو بچے کی زندگی کو خطرہ لاحق ہو سکتا تھا۔