بقا کی جنگ سری نگر میں نہ لڑی تو اسلام آباد میں لڑنی پڑے گی،سراج الحق

49

امیرجماعت اسلامی سینیٹرسراج الحق کا کہنا ہے کہ  ہمیں اپنی بقاکی جنگ سری نگر میں نہ لڑی تو اسلام آباد میں لڑنی پڑے گی بھارت کا اگلاحدف اسلام آباد ہے۔

ملی یکجہتی کونسل کے زیر اہتمام اسلام آباد میں منعقدہونے والی یکجہتی کشمیر ملٹی پارٹی کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے امیرجماعت اسلامی سینیٹرسراج الحق نے کہا کہ جہاد کا اعلان حکومت کا کام ہے یہ خود کام نہیں کرتی اورغداری کے فتوے بھی جاری کررہی ہے،بھارت کا اگلاحدف اسلام آباد ہے اگر بقا ءکی جنگ سری نگر میں نہ لڑی تو اسلام آباد میں لڑنی پڑے گی،پاکستان مشکل میں ہے اور حکومت کنفیوژن کا شکار ہے،قوم کو بہادر لیڈر کی ضرورت ہے۔

انہو ں نے کہا کہ پاکستان کے بااختیار لوگوں نے کشمیر کو اپنی ترجیحات سے نکال دیا ہے ،کشمیری پاکستان کی طرف اور پاکستان امریکہ کی طرف دیکھ رہاہے۔حریت رہنماؤں نے کہا ہے کہ کشمیریوں کاپاکستانی سیاسی جماعتوں ،اداروں پر اعتماد کم اور ٹوٹتا جارہاہے مظاہروں سے باہر نکل کرکے عملی اقدامات کریں ۔ کانفرنسوں سیمینار اور سیاسی حکمت عملی سے کشمیر کو کوئی فائدہ نہیں ہوا ہے۔

سینیٹرسراج الحق نے کہاکہ مسئلہ کشمیرپر حکمران بڑے حادثے کاانتظار کررہے ہیں،کیا80لاکھ تابوت کا انتظار کررہے ہیں، ملکی معیشت بھی مزید خراب ہو رہی ہے ظلم یہ کیا کہ 5اگست کے بعد انہوں نے قوم کو ایک کرنے کے بجائے اور قومی وحدت کوپارہ پارہ کیا ہے۔ تمام جماعتوں نے کہاکہ مسئلہ کشمیر پر ہم ایک ہیں مگر اس کے باوجود کوئی اے پی سی نہیں بلائی گئی۔

انہوں نے کہاکہ بھارت نے تمام عالمی معاہدے اور باہمی معاہدے ختم کردیئے ہیں اس کے باوجودپاکستانی فوج کس قانون کے تحت مقبوضہ کشمیر میں داخل نہیں ہورہی ہے ،اب شہدا کے لوحقین ہم سے سوال کررہے ہیں ۔کشمیر پاکستان کے لیے زندگی اور موت کا مسئلہ ہے اگر کشمیر کے لیے رسک نہیں لیں گے تو کوئی آپ کی بات نہیں سنے گا۔