ماضی میں کے ایم سی میں 10 ہزار افراد غیر قانونی طور پر بھرتی کیے گئے، ناصر شاہ

61

کراچی ( اسٹاف رپورٹر ) سندھ کے وزیر بلدیات سید ناصر حسین شاہ نے کہا ہے کہ ماضی میں کے ایم سی میں 10ہزار افراد غیر قانونی طور پر بھرتی کیے گئے،شرجیل میمن کے دور میں بائیو میٹرک کا عمل شروع کیا گیا، کافی لوگ جعلی نکلے ،مزیدغیر قانونی ملازمین کا پتا چلانے کے لیے ان کے کاغذات کی جانچ پڑتال کی جارہی ہے ۔انہوں نے یہ بات پیر کو سندھ اسمبلی میں محکمہ بلدیات سے متعلق وقفہ سوالات کے دوران ارکان کے مختلف تحریری اور ضمنی سوالوں کا جواب دیتے ہوئے کہی۔ پی ٹی آئی کی خاتون رکن ڈاکٹر سیما ضیا نے دریافت کیا کہ کیا کے ایم سی کے فنڈز میں کمی کی گئی ہے یا پھر اسے قلت کا معاملہ درپیش ہے؟ وزیر بلدیات نے کہا کہ کے ایم سی کو گزشتہ سال نالوں کی صفائی کے لیے50 کروڑ اور تنخواہوں کے الگ فنڈز دیے گئے تھے۔