حیدرآباد میں گندگی کا ڈھیر، جگہ جگہ ملبہ پڑا ہے

80

 

حیدر آباد (اسٹاف رپورٹر) حیدر آباد پریس کلب پر مختلف تنظیموں اور افراد نے اپنے مطالبات کی حمایت میں الگ الگ مظاہرے کیے۔ حیدر آباد بھٹائی ٹاؤن کے علاقے کے رہائشی علی نواز نے گھروں اور علاقے میں پانی جمع ہونے کیخلاف پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہرہ کیا، ان کا کہنا تھا کہ دو ہفتے سے فسادی واہ کینال میں پانی چھوڑے جانے کی وجہ سے مختلف علاقوں میں گندا پانی کھڑا ہوگیا ہے، جو گھروں میں داخل ہورہا ہے جس سے مچھر کی افزائش ہونے سے علاقے کے لوگوں کا جینا دوبھر ہوگیا ہے۔ میونسپل انتظامیہ سے بار بار شکایتیں کیے جانے کے باوجود اس مسئلے کا حل نہیں نکالا گیا اور بیماریاں پھیل رہی ہیں اور اس مسئلے کو فوری طورپر حل کیا جائے۔ سندھ کو تقسیم کرنے کی سازشوں کیخلاف سندھ عوامی فورم کی جانب سے اولڈ کیمپس سے پریس کلب تک ریلی نکالی گئی جس سے جان محمد جونیجو، حبیب جتوئی، ڈاکٹر انور حاجانو اور دیگر نے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ سندھ میں رہنے والی کچھ قوتیں ایم کیوایم کے ذریعے صوبے کی جغرافیائی حدود کو تبدیل کرنے کے اختیارات مرکز کے حوالے کرنے کی کوشش کررہی ہیں ، انہوں نے کہاکہ ایم کیوایم ہمیشہ سندھ کیخلاف سازشوں میں مصروف نظر آتی ہے اور وہ حکومت میں آکر اپنے مفادات حاصل کرنے کے ساتھ ساتھ سندھ دشمن منصوبوں پر بھی عمل پیرا ہیں۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ سندھ کو تقسیم کرنے کے منصوبے بنانے والوں کیخلاف کارروائی کی جائے۔ حیدرآباد سمیت سندھ بھر میں فٹ بال کے کھیل کی تباہ حالی اور کھلاڑیوں کو نظرانداز کیے جانے کیخلاف فٹ بال ایسوسی ایشن کی جانب سے پریس کلب حیدرآبا دکے سامنے احتجاجی مظاہرہ کیا گیا اور نعرے بازی کی گئی۔ مظاہرین سے ایسوسی ایشن کے صدر اعظم خان نے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ فٹ بال کی نارملائزیشن کمیٹی ایک گروپ کو فائدہ پہنچارہی ہے ۔ فیصل صالح حیات کی سربراہی میں پاکستان فٹ بال دنیا کی رینکنگ میں 168ویں نمبر پرآگئی تھی جبکہ پانچ سال سے جاری بحران کی وجہ سے اب یہ رینکنگ 206نمبر پر پہنچ گئی ہے۔ لہٰذا فوری طورپر اس کمیٹی کے اراکین کو برطرف کیا جائے اور سندھ میں فٹ بال کے کھیل کو فروغ دینے کیلیے فٹ بال اسٹیڈیم تعمیر کرنے کے علاوہ اس کے کھلاڑیوں پر توجہ دی جائے۔ انہوں نے کہاکہ فٹ بال پوری دنیا میں کھیلے جانے والا بین الاقوامی کھیل ہے لیکن بدقسمتی سے پاکستان میں اس کھیل کے ساتھ سوتیلی ماں جیسا سلوک کیا جارہا ہے۔ اگر اس پر توجہ نہ دی گئی تو پھر پورے سندھ میں احتجاج کیا جائیگا۔ حیدرآباد کے علاقے ممتاز کالونی میں کینسر کے مرض میں جاں بحق ہونیو الی خاتون صائمہ کے شوہر زبیر احمد زرداری نے اس کیس میں عامر زرداری اور اویس چانڈیو کو گرفتار کرنے کیخلاف پریس کلب کے سامنے مظاہرہ کیا ، ان کا کہنا تھا کہ زبیر ز رداری ان کی اہلیہ صائمہ جو کئی ماہ سے جگر کے کینسر میں مبتلا ہونے کے بعد فوت ہوئی لیکن اس کے عزیز اور رشتے دار گھر میں داخل ہوکر لاش کو زبردستی لے گئے اور میری بیوی کو زہر کا انجکشن لگاکر مارنے کا الزام لگایا اس کے بعد مکی شاہ پولیس نے ہمارے گھر پر چڑھائی کرکے میرے بھائی اور ایک رشتے دار کو گرفتار کرلیا ، انہوں نے کہاکہ ان کی بیوی کو زہر دے کر مارنے کا الزام بے بنیاد ہے ۔ کھوکھرمحلہ میں انسداد غیرقانونی تجاوزات آپریشن کے پہلے مرحلے کے دوران سڑک اورسرکاری اراضی سے مسمارکی گئیں تجاوزات کا ملبہ 20 روز گزرنے کے باوجود نہیں ہٹایا جاسکا، بااثر قابضین نے واگزار کرائی گئی اراضی پر دوبارہ قبضے کیلیے ملبے سے پختہ تھلوں کی تعمیرات شروع کردیں سندھ ہائی کورٹ کے احکامات کی روشنی میں اسسٹنٹ کمشنر سٹی محمد ارباب ابراہیم کی سرکردگی میں 14ستمبرکو بڑا انسداد تجاوزات آپریشن کرکے سڑک اوربلدیہ کی اراضی پر قائم ایک درجن سے زائد غیرقانونی دکانیں ،رہائشی ودیگر تجاوزات مسمار کرکے سرکاری اراضی اورسڑک کو واہ گزار کرالیاگیاتھا ،مگر اسسٹنٹ کمشنر سٹی کے بارباراحکامات کے باوجود بلدیہ حکام کی جانب سے 20روز گزرنے کے باوجودملبہ نہیں ہٹایاجاسکا ہے جس سے پورا علاقہ ملبہ کا ڈھیر بنا ہواہے جبکہ بااثر قابضین نے ایک بارپھر واہ گزار کرائی گئی اراضی اورسڑک پر قبضے کے لیے تھلوں کی تعمیرات شروع کردیں گئیں ،ذرائع کا کہناہے کہ سرکاری اراضی اورسڑک پر قبضہ اوردرگاہ محبت شاہ بخاریؒ کی متروکہ وقف املاک پر سرکاری ریکارڈ میں جعل سازی کرنے میں ملوث بااثر لینڈمافیا کا قریبی رشتے دارآفتاب سیال اسسٹنٹ کمشنر سٹی کے دفتر میں عرصہ دراز سے ریڈر کی حیثیت سے تعینات ہے جوایک بارپھر واہ گزار کرائی گئی اراضی پر دوبارہ قبضہ کرانے کیلیے خاص متحرک ہے ،اور اس سلسلے میں قابضین کی جانب سے اسسٹنٹ کمشنر سٹی کو پیمائش کرنے سے متعلق ایک تحریری درخواست جعل سازی میں ملوث چنہ خاندان کی جانب سے دی گئی ہے ،جس پر اسسٹنٹ کمشنر سٹی نے مذکورہ درخواست مزید کارروائی کے لیے مختارکار سٹی کو بھیجی ہے، جبکہ اس سے قبل اعلیٰ سطحی تحقیقات کے بعد ڈپٹی کمشنر کی سفارش پر ڈویژنل کمشنر حیدر آباد نے سروے نمبر F/1340 کے ریونیو ریکارڈ چنہ خاندان کی جانب سے کی گئی جعل سازی کو ختم کرتے ہوئے تمام انٹریاں منسوخ کرتے ہوئے محکمہ اوقاف کو متروکہ وقف املاک اپنی تحویل میں لینے کے لیے تحریری احکامات دیے ہیں۔ مذکورہ جعل سازی میں ملوث گلو کارہ حمیرا چنہ کا خاندان اس کے علاوہ تعلقہ لطیف آباد میں اربوں روپے کی 52 ایکڑ سے زائد سرکاری اراضی سمیت کئی مقامات پر سرکاری اراضی پر ریونیو کے افسران کی ملی بھگت سے قبضے کر فروخت کرچکا ہے اور کسی بھی قانونی کارروائی سے بچنے کے لیے متعلقہ اداروں اور افسران کو مختلف عدالتوں میں مقدمات دائر کرکے الجھائے رکھتا ہے، جبکہ کھوکھرمحلے میں جاری انسداد تجاوزات آپریشن کے دوسرے مرحلے میں مسجد محبت شاہ بخاریؒ کے محراب اور فرنٹ پر قائم غیرقانونی تجاوزات کو مسمار کیا جائے گا۔ علاقہ مکینوں نے ڈپٹی کمشنر عائشہ ابڑو اور اسسٹنٹ کمشنر سٹی محمد ارباب ابراہیم سے مطالبہ کیا ہے کہ مسجد محبت شاہ بخاریؒ کے فرنٹ پر قائم تمام غیرقانونی تجاوزات کا مسمار کیا جائے اور علاقہ سے فوری مسمار کی گئیں، تجاوزات کا ملبہ ہٹوانے کے لیے اقدامات کریں۔