کوٹری، حیدر آباد، جامشورو میں گوہر شاہی کی ارتدادی سرگرمیوں کو روکا جائے

76

ٹنڈو آدم (پ ر) کوٹری، حیدر آباد، جامشورو میں گوہر شاہی کی ارتدادی سرگرمیوں کو روکا جائے، توہین رسالت کے جرم میں سزایافتہ مجرم کی تنظیم پر پابندی لگائی جائے،انجمن سرفروشان اسلام ،المہدی فائونڈیشن کی ارتدادی سرگرمیوں پر اظہار تشویش، تنظیم تحفظ ناموس خاتم الانبیا پاکستان و شبان ختم نبوت کامشترکہ اجلاس مفتاح العلوم میں مفتی محمد طاہر مکی کی صدارت میں ہوا جس میں مرکزی رہنمائوں مولانا محفوظ الرحمن شمس، قاری محمد عارف، قاری اسفند یار شیخ، شبان ختم نبوت کے صدر حافظ محمد ایمان سموں، محمد محرم علی راجپوت، حافظ عبدالرحمن الحذیفی، شیر اسامہ بن طاہر ودیگر رہنمائوں نے شرکت کی۔ اجلاس میں انسداد دہشت گردی میرپور خاص کی خصوصی عدالت کی جانب سے توہین رسالت کے سنگین جرم میں سزا یافتہ جھوٹی نبوت کے دعویدار ریاض احمد گوہر شاہی کی تنظیم انجمن سرفروشان اسلام اور المہدی فائونڈیشن کی کوٹری جامشورو اور حیدر آباد میں خود کو مسلمان ظاہر کرکے ارتدادی سرگرمیوں پر انتہائی گہری تشویش کا اظہار کیا گیا۔ اس موقع پر بریفنگ میں مفتی محمد طاہر مکی کو بتایا گیا کہ گوہر شاہی کی دونوں تنظیموں کے امرا خود کو آج مسلمانوں کے بریلوی مسلک کا ظاہر کرکے نادان مسلمانوں کو مرتد بنانے میں مصروف ہیں۔ حیدر آباد، کوٹری، جاموشورو میں متعدد مقامات پر ان کی جانب سے پینا فلیکس آویزاں ہیں جن پر میلادالنبیﷺ کے اشتہارات موجود ہیں جبکہ یہ کافر ہیں، ان کے کفر پر علامہ شاہ احمد نورانی الصدیقی مرحوم اور صاحبزادہ ابوالخیر محمد زبیر سمیت بریلوی مکتب فکر کے جید علما کے فتاویٰ جات موجود ہیں۔ یہ فتاویٰ جات ہمارے قائد علامہ احمد میاں حمادی نے انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت میں پیش کیے تھے جن کی مدعیت میں گوہر شاہی کو سزائے موت دی گئی۔ رہنمائوں نے حکومت سندھ سے مطالبہ کیا کہ فوری طور پر بدترین گستاخ رسول ریاض احمد گوہر شاہی کے مریدین اور اس کی دونوں تنظیموں کی ارتدادی سرگرمیوں کو روکا جائے۔