ہڑتالی ڈاکٹر باز نہ آئے تو انہیں برطرف کردیا جائے گا،وزیر صحت کے پی

65

پشاور (آئی این پی) وزیرصحت خیبر پختونخوا نے کہا ہے کہ ہڑتالی ڈاکٹر باز نہ آئے تو انہیں نوکریوں سے فارغ کردیا جائے گا، اب عوام کومزید تکلیف کا شکار نہیں ہونے دیں گے، پکوڑوں والی بات پر شوکت یوسفزئی نے بھی وضاحت کی اور میں بھی معذرت کرتا ہوں، پکوڑے والے کرپٹ سیاستدانوں سے بہتر ہوتے ہیں۔ خیبر پختونخوا کے وزیر صحت ڈاکٹر حشام انعام اللہ نے کہا ہے کہ اب نئے بھرتی ڈاکٹر سول نہیں پبلک سرونٹس ہوں گے، اب عوام کومزید تکلیف کا شکار نہیں ہونے دیں گے، ہڑتالیوں سے درخواست ہے کہ ہڑتال سے باز آجائیں۔ ذمے داروں کو شوکاز دیے ہیں، انہیں نوکریوں سے بھی فارغ کیا جائے گا۔ وزیر صحت نے کہا کہ گزشتہ 4،5 ماہ سے یہ سلسلہ جاری ہے، ان کو 40 کے قریب شوکاز نوٹس بھی جاری کیے گئے ہیں، جن کا اختتام ان کی برطرفی کی صورت میں نکل سکتا ہے، جبکہ حکومت کمزور نہیں بلکہ ہم انہیں وقت دیتے رہے ہیں۔ ان کی ہڑتالوں میں سو، ڈیڑھ سو سے زائد افراد نہیں ہوتے اور ہم عدالت پر دبائو نہیں ڈال رہے بلکہ عوام کے سامنے اپنی پوزیشن واضح کرنا چاہتے ہیں۔ ایک سوال کے جواب میں وزیر صحت نے کہا کہ پکوڑوں والی بات پر شوکت یوسفزئی نے بھی وضاحت کی اور میں بھی معذرت کرتا ہوں لیکن وہ پکوڑے والے کرپٹ سیاستدانوں سے بہتر ہوتے ہیں۔ دوسری جانب وزیر قانون کے پی کا کہنا تھا کہ پشاور ہائیکورٹ کے فیصلے کو تسلیم کریں گے، یہاں ہوا میں باتیں ہورہی ہیں، کسی نے ایکٹ نہیں پڑھا ہوا، وزرا کمیٹی نے ڈاکٹروں کے دو مطالبات تسلیم کرلیے تھے اور اپوزیشن نے کسی قسم کی مخالفت نہیں کی۔