تمام صحافتی تنظیموں نے خصوصی میڈیا ٹریبیونل کے قیام کا حکومتی فیصلہ مسترد کردیا

138

 

اسلام آباد ( پ ر)ملک کی تمام میڈیا تنظیموں اے پی این ایس، سی پی این ای،پی بی اے،پی ایف یو جے (برنا)گروپ،(دستور)گروپ اور (ورکرز)گروپ کے مشترکہ اجلاس میں وفاقی کابینہ کے خصوصی میڈیا ٹریبونل قائم کرنے کے فیصلے کو متفقہ طور پر مسترد کردیا ہے ۔میڈیا تنظیموں کا ایک مشترکہ اجلاس اسلام آباد میں منعقد ہوا،جس میں تمام میڈیا تنظیموں کے سربراہوں نے وفاقی حکومت کی طرف سے میڈیا کی آزادی کو سلب کرنے کی کوششوں کو میڈیا ٹریبونل کیذریعے ایک باضابطہ شکل دینے پر شدید تشویش کا اظہار کیا ہے جو حکومت کے مقتدر حلقوں کی طرف سے میڈیا پر عاید پابندیوں کاتسلسل ہے۔مشترکہ اجلاس میں وفاقی حکومت سے مطالبہ کیا گیا کہ اس میڈیا دشمن فیصلے کو فوری طورپرواپس لیاجائے۔اجلاس نے فیصلہ کیا کہ میڈیا ٹریبونل کے قیام کی مزاحمت
اور مخالفت کرنے کے لیے تمام ضروری اقدامات کیے جائیں گے ۔ تمام تنظیموں کے سربراہان پر مشتمل ایک اسٹینڈنگ کمیٹی تشکیل دی گئی جو اس ضمن میں مزید اقدامات طے کرے گی۔اجلاس میں میڈیا تنظیموں کے سینئر نمائندوں بشمول حمید ہارون( صدر اے پی این ایس)عارف نظامی (صدر سی پی این ای) شکیل مسعود(چیئرمین پی بی اے)مبارک زیب پی ایف یو جے (برنا)نواز رضا پی ایف یو جے (دستور) پرویز شوکت پی ایف یو جے (ورکرز) ممتاز طاہر (نائب صدر اے پی این ایس) سرمد علی (سیکرٹری جنرل اے پی این ایس)ڈاکٹر جبار خٹک (سیکرٹری جنرل سی پی این ای) ایس ایم منیر جیلانی (جوائنٹ سیکرٹری اے پی این ایس)شہاب زبیری(فنانس سیکرٹری اے پی این ایس ) مجیب الرحمن شامی چیف ایڈیٹر (روزنامہ پاکستان ) سید ظفر عباس چیف ایڈیٹر (روزنامہ ڈان )جمیل اطہر چیف ایڈیٹر(روزنامہ تجارت)آصف زبیری پبلشر (روزنامہ بزنس ریکارڈر) راجا ریاض(پی ایف یو جے ورکرز) تحسین راٹھور(پی ایف یو جے ورکرز)خوشنود علی خان چیف ایڈیٹر(روزنامہ صحافت)سردار خان نیازی (نائب صدر سی پی این ای)اورمحسن بلال ایڈیٹر (روزنامہ اوصاف ) نے شر کت کی۔
میڈیا ٹریبونل