500بااثر شخصیات کی فہرست جاری ، مفتی تقی عثمانی سرفہرست

156

اردن: رائل اسلامک اسٹریٹجک اسٹیڈیز سینٹر نے دنیا کے 500 بااثر ترین مسلمانوں کی فہرست جاری کردی جس میں پاکستانی مذہبی اسکالرمفتی تقی عثمانی سرفہرست،وزیر اعظم عمران خان کا نام بھی شامل ہے۔

واضح رہے کہ مفتی تقی عثمانی کا تعلق برصغیر کے معروف مذہبی و علمی گھرانے سے ہے۔ آپ کے والد مفتی محمد شفیعؒ اپنے زمانے میں مفتی اعظم پاکستان تھے، جن کی تصنیف ’’معارف القرآن‘‘ کو قرآنِ پاک کے انسائیکلوپیڈیا کا درجہ دیا جاتا ہے۔

رائل اسلامک اسٹریٹجک اسٹڈیز سینٹر نے خدمت خلق، آرٹ اینڈ کلچر، سائنس، ٹیکنالوجی، سیاست اور مذہبی معاملات میں انتظامی صلاحیتوں سمیت مختلف 13 کیٹگریز میں نمایاں کارکردگی دکھانے والے پانچ سو بااثر ترین مسلمانوں کی فہرست 2020ء شائع کی ۔

بااثر مسلمانوں میں مفتی تقی عثمانی پہلے، ایران کے سپریم لیڈر آیت اللہ خانہ ای دوسرے، متحدہ عرب امارات کے زید بن النیہان تیسرے، سعودی فرمانرواچوتھے، جورڈن کے کنگ عبداللہ پانچویں نمبر پر رہے۔

اسی طرح ترک صدر رجب طیب اردوان چھٹے، مراکش کے کنگ عبداللہ ساتویں، ایرانی لیڈرآیت اللہ سید علی حسین سیستانی آٹھویں، یمن کے اسلامی اسکالر عمر بن حافظ نویں اور عمان کے سلطان قبوس بن سید السید دسویں نمبر پر رہے۔

وزیر اعظم عمران خان فہرست میں سولہویں ، اسی طرح مولانا طارق جمیل کو 36ویں اور ملائشین وزیر اعظم مہاتیر محمد 42ویں نمبر پر جگہ حاصل کرنے میں کامیاب رہے جبکہ سعودی ولی عہد محمد بن سلمان 24ویں نمبر پر رہے۔

جب کہ آخری 450 میں اپنے اپنے شعبوں میں نمایاں کارکردگی کے باعث بااثر شخصیت کا اعزاز پانے والوں پاکستانیوں میں صوفی گلوکارہ عابدہ پروین،ملالہ یوسف زئی،سماجی کارکن بلقیس ایدھی،مذہبی رہنما مولانا فضل الرحمن و دیگر کا نام بھی شامل ہے۔