منی لانڈرنگ کیس، حمزہ شہباز کے جوڈیشل ریمانڈ میں 14 روز کی توسیع

53

لاہور (نمائندہ جسارت) لاہور کی احتساب عدالت نے آمدن سے زاید اثاثوں اور منی لانڈرنگ کے الزام میں گرفتار حمزہ شہباز کے جوڈیشل ریمانڈ میں 14 روز کی توسیع کردی۔عدالت نے ملزم حمزہ شہباز کو دوبارہ 16 اکتوبر کو پیش کرنے کا حکم دے دیا۔ احتساب عدالت کے منتظم جج چودھری امیر محمد خان نے کیس کی سماعت کی۔ سماعت کے موقع پر حمزہ شہباز کو سخت سیکورٹی میں عدالت میں پیش کیا گیا۔علاوہ ازیں احتساب عدالت نے آشیانہ اقبال ہائوسنگ اسکیم اسکینڈل ریفرنس کی سماعت 16 اکتوبر تک ملتوی کرتے ہوئے شہباز شریف کی حاضری سے استثناکی درخواست منظور کرلی۔ جبکہ عدالت نے سابق ڈی جی ایل ڈی اے احد چیمہ ،سابق وزیر اعظم نواز شریف کے پرنسپل سیکرٹری فواد حسن فواد سمیت دیگر ملزموں کے جوڈیشل ریمانڈ میں توسیع 14 روز کی توسیع کر دی۔ مزید برآںایل این جی کیس میں گرفتار شاہد خاقان عباسی سے جیل میں اہلخانہ اور وکلا کی ملاقات کے لیے الگ الگ دن مختص کرنے کے لیے احتساب عدالت میں درخواست دائر کر دی گئی ہے۔ شاہد خان عباسی کی ہمشیرہ بیرسٹر سعدیہ عباسی نے احتساب درخواست میں موقف اختیار کیا ہے کہ اہل خانہ اور وکلا سے ملاقات کے لیے ایک ہی دن مختص ہے۔ وکلاء سے ملاقات کے لیے الگ دن مختص کیا جائے۔ نیب پراسیکیوٹر نے کہا کہ جیل اتھارٹیز سے پوچھنا پڑے گا کہ کون سادن مناسب ہے۔ عدالت نے درخواست پر سماعت آج تک کے لیے ملتوی کردی۔ادھر احتساب عدالت نے رمضان شوگر ملز ریفرنس کی سماعت 16 اکتوبر تک ملتوی کر دی۔احتساب عدالت کے ڈیوٹی جج جواد الحسن نے کیس کی سماعت کی۔عدالت میں ملزم حمزہ شہباز کو پیش کیا گیا جبکہ مسلم لیگ ن کے صدر شہبازشریف اسمبلی کے اجلاس میں شرکت کی وجہ سے پیش نہ ہوئے۔ عدالت نے شہباز شریف کی حاضری معافی کی درخواست منظور کر لی۔ ملزم شہباز شریف اور حمزہ شہباز پر فرد جرم عاید کی جا چکی ہے۔دریں اثناء احتساب عدالت نے سابق وزیر خزانہ اسحاق ڈار کے خلاف آمدن سے زائد اثاثوں کے ریفرنس میں ایک ملزم سعید احمد کی حاضری سے عارضی استثنیٰ کی درخواست منظور کر لی۔ عدالت نے ملزم کے وکیل کو آئندہ سماعت پرتفتیشی افسر پر جرح کی ہدایت کرتے ہوئے سماعت 9 اکتوبر تک ملتوی کر دی۔جبکہ احتساب عدالت نے ڈریپ ریفرنس میں وفاقی سیکرٹری قانون ارشد فاروق فہیم کی بریت کی درخواست پر نیب سے تحریری جواب طلب کرلیا۔