ترقی یافتہ ممالک توانائی کے ذرائع کی تحقیق میں مددکریں‘عمر ایوب

71
ٹوکیو: وفاقی وزیر توانائی عمر ایوب خان دوسری عالمی ہائیڈروجن انرجی وزارتی کانفرنس سے خطاب کررہے ہیں
ٹوکیو: وفاقی وزیر توانائی عمر ایوب خان دوسری عالمی ہائیڈروجن انرجی وزارتی کانفرنس سے خطاب کررہے ہیں

ٹوکیو (اے پی پی) وفاقی وزیر بجلی و پیٹرولیم عمر ایوب خان نے کہا ہے کہ ہائیڈروجن انرجی کی فراہمی بڑھانے کے لیے روایتی ایندھن کے مقابلے میں اس کی قیمت میں کمی لانے کی ضرورت ہے‘ پاکستان ہائیڈروجن انرجی کو سستا اور توانائی کا قابل اعتماد ذریعہ بنانے کی کوششوں میں مکمل تعاون کرے گا۔ انہوں نے ان خیالات کا اظہار بدھ کو دوسری ہائیڈروجن انرجی وزارتی کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ عمر ایوب خان نے ترق یافتہ ممالک پر زور دیا کہ وہ تمام ترقی پذیر ممالک کو ساتھ لے کر چلیں اور مستقبل کے توانائی کے اس ذریعے کی تحقیق اور ترقی میں مدد کریں۔ بعد ازاں وفاقی وزیر بجلی و پیٹرولیم نے کاربن ری سائیکلنگ سے متعلق بین الاقوامی کانفرنس میں بھی شرکت کی۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے انہوں نے یقین دلایا کہ اگرچہ گرین ہائوس گیسز میں پاکستان کا حصہایک فیصد سے بھی کم ہے، اس کے باوجود اس نے بجلی کی پیداوار میں استعمال ہونے والی زیادہ سلفر والے فیول آئل کو مرحلے وار ختم کرنے سمیت مختلف اقدامات کیے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ انرجی مکس میں متبادل اور قابل تجدید توانائی میں اضافے، بلین ٹری منصوبے، پرانی آئل ریفائنریوں کی حالت بہتر بنانے اور نئی ریفائنریوں کے قیام جیسے اقدامات بھی کیے جا رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اس وقت پاکستان میں قابل تجدید توانائی کا انرجی مکس میں حصہ 1400 میگاواٹ ہے۔