سیوریج لائنوں میں بھاری پتھر شرپسندوں کی جانب سے ڈالے گئے،مراد علی شاہ

79

کراچی(اسٹاف رپورٹر)وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے کہا ہے کہ کراچی میں سیوریج لائنوں میںبھاری پتھر شرپسندوں کی جانب سے ڈالے گئے، گورنر سندھ کا کچرے کی صفائی میں کوئی کردار نہیں، وفاقی حکومت ہٹ جائے ہم کراچی کو صاف کرکے دکھائیں گے۔وزیر اعلیٰ سندھ نے کراچی میں جاری سندھ حکومت کی صفائی مہم کے دوسرے روز اتوار کو ضلع ساؤتھ ، ویسٹ اور ملیر کا دورہ کیا، مہم کے پہلے روز 7152 ٹن کچرا اٹھایا گیا جبکہ دوسرے روز بھی بھاری پتھر 24 انچ کی سیوریج لائن ملیر 15 سے نکالے گئے جو کہ شرپسندوں کی جانب سے لائنوں میں ڈالے گئے۔ وزیراعلیٰ کے ساتھ صوبائی وزراء سعید غنی،ناصر شاہ، مرتضیٰ وہاب ، سیکرٹری لوکل گورنمنٹ روشن شیخ، ایم ڈی واٹر بورڈ اسداللہ بھی موجود تھے تاہم سندھ سالڈ ویسٹ مینجمنٹ بورڈ کے سربراہ موجود ہی نہیں تھے وزیراعلیٰ سندھ نے دورے کا آغاز لیاری ڈسٹرکٹ ویسٹ سے کیا جب کہ وہ ملیر، بھینس کالونی بھی گئے۔وزیراعلیٰ سندھ لیاری پہنچے اور ڈی آئی جی سی آئی اے پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ڈی آئی جی کا دفتر لیاری میں ہے لیکن انہیں اپنے آفس کے باہر کچرا نظر نہیں آرہا۔ انہوں نے کہا کہ وہ اپنے دفتر کے باہر صفائی کرائیں۔ وزیراعلیٰ سندھ نے ڈی آئی جی ٹریفک اور دیگر پولیس افسران کو اپنے دفتر سے خراب گاڑیاں فوری نکالنے کی ہدایت کی۔مراد علی شاہ نے لیاری کی جی ٹی ایس کابھی دورہ کیا۔وزیر اعلیٰ نے ٹرک اسٹینڈ، ماڑی پور کا دورہ کیا اور ہاکس بے روڈ پر پرانی گاڑیاں پارک کرنے پر سخت برہم ہوئے۔ وزیر اعلیٰ سندھ نے ایس ایس پی ویسٹ کو ہدایت دیتے ہوئے کہا کہ یہ گاڑیاں فوری طور پر روڈ سے ہٹائیں۔ وزیراعلیٰ نے ملیر ہالٹ ، کالا بورڈ اور ملیر15کا دورہ کیا۔وزیراعلیٰ سندھ نے وہاں موجود گٹر کا بھی معائنہ کیا،اس کے بارے میں وزیراعلیٰ سندھ کو بتایا گیا کہ اس گٹر میں بھاری پتھر نکلے ہیں۔وزیر اعلیٰ کو یہ بھی بتایا گیا کہ پی ٹی آئی کے ایم این اے اکرم نے یہاں دھرنا دیا تھا لوگوں کا خیال ہے کہ اْس وقت یہاں اس گٹر میں پتھر ڈالے گئے ہوں گے، جس پر انہوں نے کہا کہ کسی نے بھی یہ پتھر گٹروں میں ڈالے ہیں ، وہ اس شہر اور شہریوں کا دشمن ہے، ہماری مخالفت ضرور کریں لیکن شہریوں کو سزا نہ دیں۔بھینس کالونی کے دورے میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وزیر اعلیٰ سندھ نے کہا کہ کراچی کی صفائی کا کام پایہ تکمیل تک پہنچاؤں گا، یہ کام لوکل گورنمنٹ، کنٹونمنٹ بورڈز اور کے پی ٹی کا ہے لیکن الزام میرے اوپر ہے اس وجہ سے میں نے اس کام کا بیڑہ اٹھا یا ہے، میں صفائی کرکے اسے ڈی ایم سیز کے حوالے کروں گا اس کے بعد اسے برقرار رکھنا ڈی ایم سیز کی ذمے داری ہے۔انہوں نے کہا کہ ملیر ہالٹ پر گٹر میں پتھر ڈالے گئے ہیں ،ایک ایم این اے نے وہاں دھرنا دیا تھا، مقصد شاید شہر کے ڈرینیج سسٹم کو تباہ کرنا تھا، جسے سیاست کرنی ہے وہ کرے لیکن دشمنی نہ کرے۔