ٹرمپ نے مذاکرات منسوخ کر کے ثابت کردیا افغان امن منصوبہ محض ایک دھوکا تھا

50

لاہور (نمائندہ جسارت)صدر ٹرمپ نے مذاکرات منسوخ کر کے ثابت کیا کہ افغان امن منصوبہ محض ایک دھوکہ تھا۔یہ بات تنظیم اسلامی کے امیر حافظ عاکف سعید نے ایک بیان میں کہیـ۔ اُنھوں نے کہاکہ قطر میں امریکا اور افغان طالبان کے مابین طویل مذاکرات کو یکلخت منسوخ کر دینا ثابت کرتا ہے کہ امریکا نے مذاکرات کا ڈھونگ دنیا کو دھوکہ دینے کے لیے رچایا تھا۔ تاریخ گواہ ہے کہ امریکا کبھی بھی امن کا خواہشمند نہیں تھا۔ کبھی وہ عراق کے حوالے سے جھوٹا الزام تراش کر کے حملہ آور ہوتا ہے اور کبھی افغانستان کی اسلامی حکومت کو نیست و نابود کرنے کے لیے نائن الیون کا ڈھونگ رچاتا ہے اور لاکھوں مسلمانوں کو تہہ تیغ کر دیتا ہے۔اُنھوں نے کہا کہ یہ مذاکرات اُس وقت منسوخ کیے گئے جب تنازعۂ کشمیر کی وجہ سے پاک بھارت کشیدگی عروج پر تھی۔ درحقیقت پاکستان کو یہ پیغام دینا مقصود تھا کہ امریکا پورے طور پر بھارتی وزیراعظم جنونی مودی کی پشت پر کھڑا ہے۔ اُنھوں نے کہا کہ آر ایس ایس کے متعدد رہنما جس طرح بھارتی مسلمانوں اور عیسائیوں کے خاتمے کی باتیں کھلم کھلا کر رہے ہیں اِس پس منظر میں بھارت کے بعض علماء کا یہ بیان کہ بھارت میں مسلمانوں کو کوئی خطرہ نہیں‘ محلِ نظر ہے۔ اُنھوں نے کہا کہ اِس وقت امت ِ مسلمہ کے اتحاد کی شدید ضرورت ہے۔ اغیار کے حملوں میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے اور مسلمانوں کے پاس اِس کے سوا کوئی چارہ کار نہیں کہ وہ اللہ اور اُس کے رسولﷺ کی وفاداری کو اپنا شعار بنائیں ۔ انفرادی اور اجتماعی ہر سطح پر اللہ کی کتاب کو اپنا امام بنائیں اور حضورﷺ کی سنت کو مضبوطی سے تھام لیں۔ صرف اِسی صورت میں امت مسلمہ موجودہ مشکل حالات کے گرداب سے نکل سکتی ہے ۔