نثار مورائی پرجیل میںتشدد‘فریقین کوجواب جمع کرانے کیلیے آخری مہلت

70

کراچی (اسٹاف رپورٹر)سندھ ہائیکورٹ نے سابق چیئرمین فشریز نثار مورائی پر جیل میں مبینہ تشدد سے متعلق درخواست پر فریقین کو جواب جمع کرانے کے لیے 26 ستمبر تک آخری مہلت دے دی۔ جسٹس صلاح الدین پہنور اور جسٹس شمس الدین عباسی پر مشتمل دو رکنی بینچ کے روبرو سابق چیئرمین فشریز نثار مورائی پر جیل میں مبینہ تشدد سے متعلق ڈاکٹر سیما مورائی کی درخواست کی سماعت ہوئی۔ جیل حکام اور دیگر نے جواب کیلیے مزید مہلت طلب کرلی۔ عدالت نے فریقین کو جواب جمع کرانے کے لیے 26 ستمبر تک آخری مہلت دے دی۔ درخواست میں موقف اختیار کیا گیا تھا کہ نثار مورائی پیپلز پارٹی کے رہنما ہیں اور ایم بی بی ایس ڈاکٹر بھی ہیں۔ نثار مورائی نے مشیر جیل کو جیل کے اندر کرپشن کی شکایت کی۔ نثار مورائی پر جیل میں شدید تشدد کیاگیا۔ ملزم شوگر کا مریض ہے ان کو ادویات کی سخت ضرورت ہے۔ ہمارے پاس تشدد کے بعد وڈیو بھی موجود ہے۔ اس معاملے پر عدالتی انکوائری ہونی چاہیے۔ نثار مورائی نے مشیر جیل خانہ جات سے آئی جی جیل خانہ جات نصرت منگن کی شکایت کی۔ مشیر جیل خانہ جات کے جانے کے بعد آئی جی جیل خانہ جات نے میرے شوہر پر تشدد کیا۔ میرے شوہر کو انتقاماً ملیر جیل سے کراچی سینٹرل جیل منتقل کردیا۔ منتقلی کے دوران ڈپٹی سپرنٹنڈنٹ جیل ولی اللہ نے تشدد کیا۔ میرے شوہر کو گاڑی کے اندر سخت تشدد کا نشانہ بنایا گیا۔ ان کی زندگی کو خطرہ ہے عدالت نوٹس لے۔ جیل حکام کو تشدد سے روکا جائے۔