سرکاری اداروں کے نقصانات کو روکنا اولین ترجیح ہے، مشیر خزانہ

88

اسلام آباد (اے پی پی) وزیراعظم کے مشیر برائے خزانہ ومحصولات ڈاکٹرعبدالحفیظ شیخ نے بہتر اسلوب حکمرانی اورفعال نگرانی کے ذریعے سرکاری ملکیتی اداروں میں نقصانات کو روکنا حکومت کی اولین ترجیح ہے۔ انہوں نے یہ بات جمعرات کو یہاں سرکاری اداروں میں گورننس کی ساخت کو بہتر کرنے اور اس ضمن میں سرمایہ پاکستان لمیٹڈ(ایس پی ایل) کے کردار کے حوالے سے منعقدہ اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کہی۔ رواں سال کے اوائل میں کابینہ نے سرمایہ پاکستان لمیٹڈ(ایس پی ایل) قائم کی تھی جس کا مقصد سرکاری اداروں میں گورننس کو بہتر بنانے کے لیے پیشہ ورانہ مہارت کو بروئے کارلاتے ہوئے انہیں منافع بخش بنانا ہے۔اجلاس میں شوکت ترین اورزبیرسومرو سمیت معروف ماہرین اقتصادیات اوروزارت خزانہ کے سینئرافسران نے شرکت کی۔اجلاس میں سرکاری ملکیتی اداروں کی موجودہ حالت زارکاتفصیلی جائزہ لیاگیا۔اجلاس میں فیصلہ کیاگیا کہ سرمایہ پاکستان کے بورڈ کے دوبارہ قیام اورسرمایہ پاکستان لمیٹڈکی پیشہ ورانہ مہارت سے استفادہ کرنے والے اور فعال نگرانی میں آنے والے مجوزہ ادروں کے نا م اوردیگر تفصیلات کابینہ کی کمیٹی کے پروپوزل کے ذریعے وزیراعظم کو بجھوائی جائے گی۔