مسئلہ کشمیر پر وزیر خارجہ کی زبان نہیں حکومت ہی پھسل چکی ہے، حافظ حسین

31

کوئٹہ (آن لائن) جمعیت علمائے اسلام کے مرکزی ترجمان اور سابق پارلیمنٹرین حافظ حسین احمد نے کہا ہے کہ کشمیر کے معاملے
پر وزیر خارجہ کی زبان نہیں بلکہ ان کی حکومت پھسل چکی ہے، نائن الیون کے روز ایک بار پھر ٹرمپ نے افغانستان کے ساتھ ہاتھ کیا ہے، پی ٹی آئی محکمہ پولیس کو سیدھا کرنے کے دعوے کرتی رہی لیکن جب سے بزدار کو لایا گیا ہے پنجاب پولیس نے ظلم کی انتہا کردی، پنجاب پولیس خوف کی علامت بن چکی ہے۔ بدھ کے روز اپنی رہائشگاہ جامع مطلع العلوم میں مختلف وفود اور صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں جو کچھ ہو رہا ہے وہ امریکا، اسرائیل اور بھارت کی مشترکہ کارروائی ہے۔ انہوں نے کہا کہ وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کشمیر کو بھارتی ریاست قرار دیکر لاشعور میں معاملات کو ظاہر کردیا یہ ان کی زبان کا پھسلانا نہیں کیوں کہ کشمیر اور دیگر معاملات پر ان کی حکومت پھسل چکی ہے اور بین الاقوامی اسٹیبلشمنٹ ان سے بھرپور کام لینا چاہتی ہے۔ آج نائن الیون کے دن ایک بار پھر صدر ٹرمپ نے افغانستان کے ساتھ ہاتھ کیا ہے، دراصل وہ افغانستان امن معاہدے کی آڑ میں بھارت کی مدد کرنا چاہتے ہیں اور ثالثی کے کردار کا جھانسہ دیکر بھارت کو خطے کی چودھراہٹ دینا چاہتے ہیں۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ نواز شریف کے جیل سے پیغام کے بعد مسلم لیگ ن کی جیل سے باہر کی قیادت کی خاموشی غیر متوقع نہیں ہے لیکن ہم آخری لمحہ تک مسلم لیگ نواز اور پیپلز پارٹی کو حقیقی اپوزیشن اور عوام کی امنگوں کے مطابق جے یو آئی کے طے شدہ پروگرام میں شامل کرنے کی کوشش جاری رکھیں گے۔
حافظ حسین