جماعت اسلامی کے تحت مساجد کے باہر مظاہرے ،عوم کو آزادی کشمیر مارچ میں شرکت کی دعوت

48

کراچی(اسٹاف رپورٹر)جماعت اسلامی کے تحت یکم ستمبر کو شاہراہ فیصل پر ہونے والے ’’آزادی کشمیر مارچ‘‘ کی تیاریوں اور عوامی رابطہ مہم کے سلسلے میں جمعہ کو شہر بھر میں سیکڑوں مساجد کے باہر احتجاجی مظاہرے اور کارنرمیٹنگز کا انعقاد کیاگیا ،ہزاروں کی تعداد میں ہینڈ بلز تقسیم کیے گئے اور عوام کو آزادی کشمیر مارچ میں شرکت کی دعوت دی گئی ۔علاوہ ازیں امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن کی زیر صدارت ادارہ نور حق میں ذمے داران کے ایک اجلاس میں مارچ کی تیاریوں اور انتظامات کا جائزہ لیا گیا اور مارچ کے انتظامات کے ذمے داران اور کارکنوں کو ہدایت کی گئی ہے کہ مارچ کو بھرپور اور کامیاب بنانے کے لیے بڑے پیمانے پر انتظامات کیے جائیں اور عوامی رابطہ مہم کو تیز کیا جائے ۔تفصیلات کے مطابق جماعت اسلامی کی جانب سے نمازجمعہ کے بعد تمام اضلاع میں علاقہ جات کے تحت سیکڑوں مساجد کے باہر مظاہرے اورکارنر میٹنگز کی گئیںجن میں جماعت اسلامی کے کارکنوں اور شہریوں نے شرکت کی اور زبردست جوش و خروش کا مظاہرہ کیا گیا۔کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کے لیے اور بھارت کی جارحیت و ریاستی جبر وتشدد کے خلاف پرجوش نعرے لگائے گئے ،اس موقع پر شرکا نے بینرز اور پلے کارڈز بھی اٹھائے ہوئے تھے جن پر اقوام متحدہ اور عالمی برادری کو مقبوضہ کشمیر میں ڈھائے جانے والے مظالم پر متوجہ کرنے ،کشمیریوں کو حق خود ارادیت دلانے ، کشمیریوں سے اظہار یکجہتی اور بھارت کی مذمت کے حوالے سے مختلف عبارتیں درج تھیں ۔امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن کی جانب سے علما کرام اور خطبا عظام سے کی گئی اپیل پر بھی علما کرام نے مثبت رد عمل کا مظاہرہ کیا اور نماز جمعہ کے اجتماعات اور خطبات میں مقبوضہ کشمیر کے حالیہ سنگین حالات اور بھارت کی جانب سے دفعہ 370اور 35اے کو ختم کر کے مقبوضہ کشمیر کو اپنا حصہ بنانے کے بعد پیدا ہونے والی صورتحال کو اجاگر کیا گیا اور لوگوں کو کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کرنے کے لیے ترغیب دی گئی ۔دریں اثنا امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن نے اجلاس میں گفتگو کرتے ہوئے کہاکہ یکم ستمبر کو ہونے والا آزادی کشمیر مارچ موجودہ حالات میں انتہائی اہمیت کا حامل ہے ، اب خاموش بیٹھنے کا وقت نہیں ہے ، مسئلہ کشمیر اور بھارت کے حالیہ اقدامات کو عالمی سطح پر اجاگر کرنے کی ضرورت پہلے سے بہت زیادہ بڑھ گئی ہے ،شہر میں علما کرام اور عوام سے رابطے جاری ہیں اور ہر طرف سے زبردست حمایت اور جوش و خروش کا مظاہرہ کیا جارہا ہے ،مارچ اہل کراچی سمیت پوری قوم کے احساسات و جذبات کا ترجمان ثابت ہوگا اور کشمیریوں کو بھی پیغام دے گا کہ وہ تنہا نہیں ہم سب ان کے ساتھ ہیں ۔ذمے داران اور کارکنان رابطہ مہم کو مزید تیز کریں اور عوام کی کثیر تعداد میں شرکت کے پیش نظر مارچ کی تیاریاں اور انتظامات بڑے پیمانے پر کیے جائیں۔