تعلیمی بورڈ میں من پسند لوگوں کی بھرتیاں کی جارہی ہیں، علی شان شاہ

36

میرپور خاص (نمائندہ جسارت) سندھ ایجوکیشنل بورڈ کمیٹی کی جانب سے سندھ کے تمام تعلیمی بورڈ کی اہم پوسٹوں کو سندھ حکومت کی طرف سے سیاسی بھینٹ چڑھانے اور میرٹ کا قتل عام کر کے کرپشن کا بازار گرم کرنے کیخلاف ہنگامی اجلاس منعقد ہوا۔ اجلاس کے جاری اعلامیے کے مطابق چند روز قبل کراچی میں آئی بی اے کی جانب سے سندھ کے تمام تعلیمی بورڈز کی اہم پوسٹوں کے لیے تحریری ٹیسٹ لیا گیا، جس میں امیدواروں کے ساتھ غیر سنجیدہ و غیر ذمے دارانہ رویہ اختیار کرتے ہوئے پین کی جگہ پینسل کا استعمال کرایا گیا، اس غیر ذمے دارانہ رویے سے یہ ثابت ہوتا ہے کہ حکومت سندھ اپنی کرپشن او ر سفارشی روایات کو برقرار رکھتے ہوئے غیر قانونی اور سیاسی بھرتیاں کرنے کی تیاری کررہی ہے، جس سے سندھ کے تمام تعلیمی بورڈز کے ملازمین سمیت لاکھوں معصوم طلبہ و طالبات کے مستقبل کو دائو پر لگنے کی تیاری کی جارہی ہے، خود مختار اداروں میں سیاسی بھرتیاں یہ ثابت کرتی ہیں کہ سندھ میں میرٹ کا خون کر کے اسے دفن کرنے کی پوری تیاری ہے، سندھ ایجوکیشنل بورڈ کمیٹی اور آل پاکستان کلرک ایسوسی ایشن کے جنرل سیکرٹری علی شان شاہ اور دیگر رہنمائوں کا کہنا ہے کہ حکومت سندھ کے اس متعصبانہ اور غیر سنجیدہ رویے سے سندھ کے تمام تعلیمی بورڈز کے ملازمین میں شدید قسم کی مایوسی اور بے اعتمادی کی صورتحال واضح طور پر نظر آرہی ہے۔ تعلیمی بورڈ میں اپنے من پسند اور سفارشی لوگوں کی بھرتیاں سندھ ایجوکیشنل بورڈ کمیٹی آل پاکستان کلرک ایسوسی ایشن اور سندھ کے تعلیمی بورڈز کے کسی بھی ملازم کے لیے قابل قبول نہیں ہے کیوں کہ یہ عمل میرٹ اور ملازمین کے حقوق کا قتل ہے۔ انہوں نے کہا کہ سندھ کے تعلیمی بورڈ کے سینئر ملازمین کی پرووموشن کو ہمیشہ کے لیے دفن کرکے سفارشی اور غیر قانونی طریقے سے سندھ کے تمام تعلیمی بورڈز میں سیکرٹریز اور کنٹرولر کو بھرتی نہیں ہونے دیں گے اور سخت احتجاجی تحریک چلائی جائے گی۔ انہوں نے صدر پاکستان، وزیر اعظم، چیف آف آرمی اسٹاف، چیف جسٹس سے مطالبہ کرتے ہیں کہ حکومت سندھ کے اس غیر ذمے دارانہ رویے کا نوٹس لیتے ہوئے تعلیمی بورڈز کے ملازمین اور لاکھوں طلبہ و طالبات کا مستقبل تاریک ہونے سے بچایا جائے۔