روس: راکٹ انجن کی تیاری کے دوران دھماکا‘ 5 اہلکار ہلاک

86
کوپن ہیگن: بم دھماکے کے بعد پولیس اور ماہرین جائے وقوع سے شواہد اکٹھے کررہے ہیں
کوپن ہیگن: بم دھماکے کے بعد پولیس اور ماہرین جائے وقوع سے شواہد اکٹھے کررہے ہیں

ماسکو (انٹرنیشنل ڈیسک) روسی بحریہ کی میزائل اور راکٹ بنانے کی تجربہ گاہ میں انجن کی تیاری کے دوران زوردار دھماکا ہوگیا جس کے نتیجے میں 5 افراد ہلاک اور 3 بری طرح جھلس کر زخمی ہوگئے۔ بین الاقوامی خبر رساں اداروں کے مطابق روس کی میزائل و راکٹ بنانے والی ریاستی جوہری کمپنی روساٹوم کے ترجمان کا کہنا ہے کہ دھماکے کے وقت انجینئرنگ اور ٹیکنیکل ٹیم کے اہل کار ’’آئسو ٹوپ پاور سورس‘‘ پر کام کر رہے تھے اور صورت حال اب قابو میں ہے، خطرے کی کوئی بات نہیں۔ دوسری جانب اسپتال ذرائع بھی کہنا ہے کہ دھماکے کے بعد جن زخمیوں کو اسپتال لایا گیا، انہوں نے نیوکلیئر اور کیمیکل مواد سے بچاؤ کے لباس پہنے ہوئے تھے۔ ہلاک اور زخمی ہونے والوں کی شناخت ظاہر نہیں کی جا رہی ہے اور میڈیا کو اسپتال میں داخل ہونے کی اجازت نہیں۔ دوسری جانب آزاد ذرائع کا کہنا ہے کہ دھماکے کے فوری بعد تابکاری مواد کا اخراج شروع ہوگیا تھا اور فضا میں تابکاری کی بو پھیل گئی تھی جس پر مقامی آبادی کا آئیوڈین کی خریداری کے لیے میڈیکل اسٹور میں ہجوم لگ گیا تھا تاہم تابکاری اخراج 40 منٹ کے بعد معمول پر آ گئی۔ اُدھر امریکی ماہرین کا کہنا ہے کہ شمالی روس میں جوہری تنصیبات کے مقام پر ہونے والے حادثاتی دھماکے کے بعد جوہری شعاعوں کا اخراج بھی ہوا تھا۔