ٹرمپ نے اپنے خلاف تفتیش میں رکاوٹیں ڈالیں‘ رابرٹ ملر

191
واشنگٹن: رابرٹ ملر کانگریس کی انٹیلی جنس کمیٹی کے سامنے بیان دینے سے قبل قسم اٹھا رہے ہیں
واشنگٹن: رابرٹ ملر کانگریس کی انٹیلی جنس کمیٹی کے سامنے بیان دینے سے قبل قسم اٹھا رہے ہیں

واشنگٹن (انٹرنیشنل ڈیسک) امریکا میں 2016ء کے صدارتی انتخابات میں روسی مداخلت کی تحقیقات کرنے والے سابق خصوصی تحقیقاتی افسر رابرٹ ملر نے کانگریس کمیٹی کو گواہی دیتے ہوئے بتایا کہ ان کی تفتیش میں صدر ٹرمپ کو اس الزام سے بری نہیں کیا گیا، جس کے مطابق انہوں نے مبینہ طور پر تحقیقات میں رکاوٹ ڈال کر انصاف کا راستہ روکنے کی کوشش کی۔ کانگریس کی جوڈیشری کمیٹی میں کئی گھنٹوں پر محیط گواہی کے دوران کمیٹی کے چیئرمین جیرالڈ نیڈلر نے رابرٹ ملر سے پوچھا کہ کیا آپ صدر کو اس مقدمے سے مکمل طور پر بری قرار دیتے ہیں؟ جس پر انہوں نے جواب دیا کہ نہیں، صدر کو ان کارروائیوں سے بری نہیں کیا جا سکتا جو انہوں نے مبینہ طور پر کیں۔ دوسری جانب روس کے نائب وزیر خارجہ سرگئی ریابکوف نے کہا ہے کہ وہ کانگریس کمیٹی میں ملر کی گواہی پر نظر رکھیں گے۔ دوسری جانب ایف بی آئی کے ڈائریکٹر کرسٹوفر ورائے نے خبردار کرتے ہوئے کہا ہے کہ ماسکو 2020ء کے صدارتی انتخابات میں بھی مداخلت کے لیے تیار بیٹھا ہے۔اُدھر روس نے ایسے الزامات کی تردید کی ہے۔