ڈاکٹر عافیہ صدیقی کی رہائی پر وزیراعظم کا موقف بے جان رہا ،ذکراللہ مجاہد

119

لاہور (نمائندہ جسارت) امیر جماعت اسلامی لاہور ذکر اللہ مجاہد نے کہا ہے کہ دورہ امریکا میں قوم کی بیٹی ڈاکٹر عافیہ صدیقی کی رہائی کے حوالے سے وزیراعظم پاکستان کا موقف انتہائی بے جان ہے۔ شکیل آفریدی کے بدلے ڈاکٹر عافیہ کی رہائی کی بات ہوسکتی ہے کے موقف نے قوم کو مایوس کیا ہے۔ ڈاکٹر عافیہ صدیقی کو ایسے پاکستان لایا جانا چاہیے تھا جیسے ریمنڈ ڈیوس کو سابقہ حکومت نے امریکا بھیجا۔ امریکی صدر ٹرمپ کی مسئلہ کشمیر پر ثالثی کی پیشکش اقوام متحدہ کی قرار دادوں کے نتاظر میں تو فائدہ مند ہوسکتی ہے ورنہ یہ ایک لالی پاپ کے سوا کچھ نہیں۔ ان خیالات کا اظہار گزشتہ روز انہوں نے مختلف طبقہ فکر سے تعلق رکھنے والے سیاسی و سماجی وفود سے گفتگو کے دوران اپنے ایک بیان میں کیا۔ ذکر اللہ مجاہد نے مزید کہا کہ مسئلہ کشمیر کے حوالے سے اقوام متحدہ کی قرار دادوں پر عمل درآمد ہی سے خطے میں پائیدار امن ممکن ہے۔ بھارت کو اچھی طرح معلوم ہے کہ مسئلہ کشمیر کے سلسلے میں اقوام متحدہ کی قرار دادیں پوری عالمی برادری نے تسلیم کر رکھی ہیں اور خود بھارتی حکمران بھی ایک طویل مدت تک ان قرار دادوں پر عمل درآمد کے بارے میں عالمی سطح پر یقین دہانی کراتے رہے ہیں۔ مسئلہ کشمیر کا اقوام متحدہ کی قرار دادوں کے مطابق حل ناگزیر ہے۔ ذکر اللہ مجاہد نے مزید کہا کہ وزیراعظم عمران خان امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے حوالے سے کسی غلط فہمی میں نہ رہیں، ان کا سابقہ ریکارڈ دنیا کے سامنے ہے۔ امریکی صدر کا رویہ اسی وقت دوستانہ ہوتا ہے جب دوسرا فریق امریکا کی مرضی کے مطابق چل رہا ہوتا ہے۔ اقتدار سے قبل وزیر اعظم پاکستان قوم کو امریکا کی غلامی اور پالیسیوں کا جو بھاشن دیتے رہے ہیں وہ وزیر اعظم پاکستان کو یاد ہونا چاہیے کیونکہ قوم کو وہ سارے وعدے اور دعوے اچھی طرح یاد ہیں۔