فریال تالپور کی نااہلی کے لیے الیکشن کمیشن میںدرخواست

61

کراچی(اسٹاف رپورٹر) پاکستان تحریک انصاف کے اراکین اسمبلی ارسلان تاج گھمن اور رابعہ اظفر نے فریال تالپور کی نا اہلی کے لیے الیکشن کمیشن میں درخواست دائر کردی۔درخواست میں موقف اختیار کیا گیا کہ رکن سندھ اسمبلی و رہنما پیپلز پارٹی فریال تالپور کی شہداد کوٹ اور لاڑکانہ میں جائدادیں ہیں، فریال تالپور نے اپنی تین جائیدادوں کو الیکشن کمیشن سے چھپایا۔ فریال تالپور آئین کی شق 62 (ایف) کے تحت صادق و امین نہیں رہی ہیں۔ لہٰذا فریال تالپور سندھ اسمبلی کی رکنیت کی اہل نہیں رہیں انہیں نااہل قرار دیا جائے۔ درخواست میں مزید کہا گیا کہ 22 جون 2019 ء کو اسپیکر سندھ اسمبلی آغا سراج درانی کو بھی فریال تالپور کی درخواست دی تھی۔قواعد کے تحت اسپیکر سندھ اسمبلی نے درخواست پر30 روز میں عملدرآمد کرنا ہوتا ہے، 30 روز گزرنے کے باوجود اسپیکر سندھ اسمبلی نے درخواست پر عملدرآمد نہیں کیا، بعد ازاں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ارسلان تاج گھمن نے کہا کہ 22 جون کو اسپیکر سندھ اسمبلی آغا سراج درانی کو فریال تالپور کی نااہلی کی درخواست دی تھی، فریال تالپور نے اپنی تین جائدادیں ظاہر نہیں کیں، فریال تالپور نے لاڑکانہ اور شہداد کوٹ میں اپنی جائیداد چھپائیں، اسپیکر سندھ اسمبلی نے قانون کے مطابق 30 دن گزرنے کے باوجود کوئی فیصلہ نہیں کیا،اسپیکر کو دی جانے والی درخواست کی کاپی الیکشن کمیشن کو بھی فراہم کی تھی،منور تالپور کے خلاف بھی جلد الیکشن کمیشن سے رجوع کرینگے، منور تالپور نے بھی فریال تالپور کی جائدادیں ظاہر نہیں کی جس کے خلاف کارروائی ہونی چاہیے۔