حکومت قادیانیوں سے متعلق دو ٹوک پالیسی کا اعلان کرے، لیاقت بلوچ

326
کراچی: نائب امیر جماعت اسلامی پاکستان لیاقت بلوچ بزنس فورم کے رہنما خلیفہ انوار احمد کی وفات پر لواحقین سے تعزیت کررہے ہیں
کراچی: نائب امیر جماعت اسلامی پاکستان لیاقت بلوچ بزنس فورم کے رہنما خلیفہ انوار احمد کی وفات پر لواحقین سے تعزیت کررہے ہیں

 

 

کراچی/ لاہور (اسٹاف رپورٹر+ نمائندہ جسارت) نائب امیر جماعت اسلامی پاکستان و سیاسی امور کمیٹی کے صدر لیاقت بلوچ نے کہاہے کہ حکومت قادیانیوں کے حوالے سے آئین کے تناظر میں واضح اور دوٹوک پالیسی بیان دے اور عالمی سطح پر بھی مضبوط موقف اختیار کرے ،وزیراعظم عمران خان نے قادیانی عقیدہ پر اپنے ذاتی موقف کا اظہار کردیا ،اچھا کیا ہے ، 1973 ء کے دستور میں تحفظ ختم نبوت کا آرٹیکل ختم کرنا کسی کے باپ کے بھی بس میں نہیں ، اصل مسئلہ یہ ہے کہ قادیانی آئین پاکستان کو تسلیم نہیں کر رہے ، دنیا بھر میں پاکستان کے خلاف سازشیں کر رہے ہیں، پاکستان پر بیرونی دبائو کی وجہ سے اسلامی قوانین ، عقیدۂ تحفظ ختم نبوت اور تحفظ ناموس مصطفیٰؐ قوانین بے اثر کیے جارہے ہیں ، قادیانیوں کی ناجائز سرپرستی اور سرگرمیاں بڑھتی جارہی ہیں ، پاکستان میں تمام
اقلیتوں کے تمام ا نسانی اور بنیادی حقوق محفوظ ہیں ، آئین تسلیم نہ کر کے قادیانیوں نے خود اپنے اور ملک کے لیے مسائل کھڑے کیے ہیں ۔ لیاقت بلوچ نے اپنے ایک بیان میں کہاکہ اپوزیشن کی تمام جماعتوں کو اپنے ایجنڈے اور ترجیحات کے مطابق احتجاج کا حق ہے۔ حکومتی نااہلی اور ناکامی کے خلاف ہر احتجاج کا ہم خیر مقدم کرتے ہیں ۔ انہوںنے کہاکہ فاٹا اضلاع کے انتخابات میں حکمران جماعت پی ٹی آئی کو بحیثیت مجموعی شکست ہوئی ہے ۔ یہ پورے ملک میں عوام کے حکومت مخالف درجہ حرارت کی علامت ہے ۔ فاٹا اضلاع میں پرامن انتخابات قبائلی عوام کا جمہوریت پر پختہ یقین و عمل کا خوشگوار اعلان ہے۔لیاقت بلوچ نے کہاکہ عید الاضحی کے بعد 23 اگست کو پشاور میں تاریخ ساز عوامی مارچ ہوگا ۔علاوہ ازیں جماعت اسلامی صوبہ سندھ کے میڈیا سیل کے دورے کے موقع پر گفتگو کرتے ہوئے لیاقت بلوچ نے کہا کہ موجودہ حکومت کو آئی ایم ایف کی ٹیم چلا رہی ہے،حکمرانوں نے بیرونی ڈکٹیشن پرنہ صرف نظریاتی سرحدوں،آزادی وخودمختاری کو دائو پرلگادیا ہے بلکہ اپنے وعدوں کے برعکس مہنگائی کی مسلسل بمباری کرکے غریب عوام کا جینا دوبھرکردیا ہے۔ جماعت اسلامی آئندہ انتخابات میں اپنی جداگانہ حیثیت کو برقراررکھنے کے ساتھ دینی جماعتوں کے ساتھ مکمل ہم آہنگی اورنظریاتی سرحدوں کی حفاظت سمیت دینی وملی مسائل پر ملی یکجہتی کونسل کے پلیٹ فارم سے جدوجہد جاری رکھے گی،وزیراعظم کو دورہ امریکا کے حوالے سے اپوزیشن کو اعتماد میں لینا چاہیے تھا۔حالات حاضرہ کے حوالے سے قومی سطح پرحکمت عملی بنانے کے لیے 7اگست کو مرکزی سیاسی کمیٹی کا اجلاس ہوگا۔اس موقع پر جماعت اسلامی صوبہ سندھ کے امیر محمد حسین محنتی اور سیکرٹری اطلاعات مجاہد چنا سمیت دیگر ذمے داران بھی موجود تھے۔
لیاقت بلوچ