پاک افغان تعلقات بلندی کی جانب گامزن ہیں ،شہریارآفریدی

69

اسلام آباد (اے پی پی) وفاقی وزیر برائے انسداد منشیات و سیفران شہریار خان آفریدی نے کہا ہے کہ افغان صدر اشرف غنی کے سینئر مشیر برائے قومی سلامتی سرور احمد زئی کا دورہ پاکستان دو طرفہ تعلقات کے فروغ اور افغان مہاجرین کی باعزت وطن واپسی کے لیے مفید ثابت ہو گا، پاکستان اور افغانستان کے تعلقات نئے افق کی بلندیوں کی جانب گامزن ہیں، افغانستان کی درخواست پر افغانستان سے بھارت جانے والوں کے لیے پاکستانی فضائی حدود کو کھولا گیا ہے، افغانستان ایک خود مختار ریاست ہے، پاکستان اپنے قریبی ہمسایہ ملک افغانستان میں قیام امن کے لیے اپنا کردار ادا کررہا ہے اور کرتا رہے گا۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے جمعہ کو افغان صدر کے سینئر مشیر برائے قومی سلامتی سرور احمد زئی کے ساتھ پریس انفارمیشن ڈیپارٹمنٹ میں پریس کانفرنس سے خطاب کے دوران کیا۔ اپنے دورے کے تفصیل بیان کرتے ہوئے افغان صدر کے مشیر نے بھرپور میزبانی اور افغانستان کے لیے ویزہ پالیسی میں بہتری کے لیے پاکستان کی یقین دہانی پر شکریہ ادا کیا۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان گزشتہ 40 برس سے افغان پناہ گزینوں کی میزبانی کررہا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ افغان وزارت مہاجرین اپنے افغان بھائیوں کی باعزت وطن واپسی کے لیے پالیسی وضع کر رہی ہے۔انہوں نے کہا کہ پاکستان کے ساتھ افغانستان کے تعلقات تاریخی اور دہائیوں پر محیط ہیں جن میں ماضی میں اتار چڑھائو آتا رہا لیکن پاکستان کی موجودہ حکومت افغانستان کے ساتھ خوشگوار تعلقات کے لیے اقدامات اٹھا رہی ہے جو خوش آئند ہیں۔ انہوں نے کہا کہ بعض قوتیں پاکستان اور افغانستان کے درمیان خوشگوار تعلقات نہیں چاہتیں اور لندن میں پیش آنے والا واقعہ قطعی طورپر افغان پناہ گزینوں اور افغان عوام کے جذبات کی ترجمانی نہیں کرتا۔