امریکی تاریخ میں پہلا فلسطینی چیف جسٹس کے عہدے پر تعینات

65
امریکی ریاست نیو جرسی کے شہر پیٹرسن کی عدالت کے چیف جسٹس عبدالحمید ہادی ۔ چھوٹی تصویر سوئٹزرلینڈ کے فلسطینی معلم کی ہے
امریکی ریاست نیو جرسی کے شہر پیٹرسن کی عدالت کے چیف جسٹس عبدالحمید ہادی ۔ چھوٹی تصویر سوئٹزرلینڈ کے فلسطینی معلم کی ہے

ٹرنٹن (انٹرنیشنل ڈیسک) امریکا کی تاریخ میں پہلی مرتبہ فلسطینی نژاد جج عبدالمجید ہادی کو ریاست نیو جرسی کے شہر پیٹرسن کی عدالت میں چیف جسٹس کے عہدے پر تعینات کردیا گیا۔ شہر کے میئر انڈریاسائگ نے اپنے بیان میں کہا کہ انہیں ایک فلسطینی مسلمان کے امریکا میں چیف جسٹس کے عہدے پر فائز ہونے پر فخر ہے۔ قبل ازیں فلسطینی نژاد رشیدہ طلیب نے امریکی شہر ڈیٹرویٹ سے ڈیموکریٹک پارٹی کے ٹکٹ پر کانگریس کی رکنیت حاصل کی تھی۔ دوسری جانب سوئٹزرلینڈ کی ’بازیل‘ یونیورسٹی کی جانب سے نوجوان فلسطینی معلم کو فلسطین میں مدرس مقرر کردیا گیا۔ فلسطین کی بیرزیت یونیورسٹی سے فارغ التحصیل سعد عمیرہ نے بازل یونیورسٹی کے سوشل سائنسز کالج میںاربن اسٹڈیز کے موضوع پر ممتاز نمبروں سے کامیابی حاصل کی، جس کے بعد یونیورسٹی نے انہیں فلسطین میں نسلی امتیاز و تطہیر کے موضوع پر تدریس کی ذمے داریاں سونپ دیں۔ایسے وقت میں جب صہیونی ریاست فلسطینی علاقوں میں تعمیروترقی کے عمل میں رکاوٹ ڈال رہی ہے، فلسطینی معلم دنیا کے سامنے اسرائیل کی جانب سے فلسطین میں یہود آبادکاری اور نسل پرستی کے لیے اختیار کیے گئے حربوں کو سامنے لارہے ہیں۔سوئس یونیورسٹی میں عمیرہ نے فلسطین میں نسلی تطہیر، رام اللہ، بیروت اور عمان میں سماجی تنظیموں کے ساتھ بھی کام کیا۔