مندی کے نتیجے میںسرمایہ کاروں کو55ارب روپے کا خسارہ

136

کراچی(اسٹاف رپورٹر)پاکستان اسٹاک مارکیٹ جمعرات کواتارچڑھائوکے بعدمندیکی لپیٹ میںرہی اور کے ایس ای 100 انڈیکس 34800، 34700 اور 34600کی نفسیاتی حدوں سے گرگیا،مندی کے نتیجے میں سرمایہ کاروں کے55ارب9کروڑ روپے سے زائد کا سرمایہ کاروں کو خسارہ ہو ا ،کاروباری حجم گذشتہ روز کی نسبت14.23فیصدکم جبکہ75.78فیصد حصص کی قیمتوں میں کمی ریکارڈ کی گئی۔حکومتی مالیاتی اداروں، مقامی بروکریج ہائوسزسمیت دیگرانسٹی ٹیوشنز کی جانب سے توانائی،سیمنٹ،فوڈزاور دیگرمنافع بخش سیکٹرکی پر کشش قیمتوں پر خریداری کے باعث کاروبارکا آغاز مثبت زون میں ہواٹریڈنگ کے دوران ایک موقع پرکے ایس ای100انڈیکس35269پوائنٹس کی بلندسطح پر بھی دیکھاگیاتاہم فروخت کے دبائو اور پرافٹ ٹیکنگ کے سبب مقامی سرمایہ کار گروپوں نے اپنے حصص فروخت کرنے کو ترجیح دی ، جس کے نتیجے میں تیزی کے اثرات زائل ہوگئے اوردوران ٹریڈنگ ایک موقع پر کے ایس ای100انڈیکس 34467پوائنٹس کی نچلی سطح پر بھی دیکھا گیا تاہم غیرملکی سرمایہ کاروں کی جانب سے ایک بار پھر مارکیٹ میں سرمایہ کاری کی گئی ، جس کے نتیجے میں کے ایس ای100انڈیکس کی 34500کی حد بحال ہوگئی تاہم اتارچڑھائو کا سلسلہ سارادن جاری رہا۔ مارکیٹ کے اختتام کے ایس ای 100 انڈیکس 325.93پوائنٹس کمی سے35570.62پوائنٹس پر بند ہوا۔ جمعرات کو مجموعی طور پر318کمپنیوں کے حصص کا کاروبار ہوا،جن میں سے61کمپنیوں کے حصص کے بھاؤ میں اضافہ،241کمپنیوں کے حصص کے بھاؤ میں کمی جبکہ16کمپنیوں کے حصص کے بھاؤ میں استحکام رہا۔ سرمایہ کاری مالیت میں 55 ارب 9 کروڑ 98 لاکھ 5 ہزار240روپے کی کمی ریکارڈ کی گئی،جس کے نتیجے میں سرمایہ کاری کی مجموعی مالیت گھٹ کر 69 کھرب 60 ارب87کروڑ91لاکھ63ہزار867روپے ہو گئی۔جمعرات کومجموعی طور پر 11 کروڑ 18 لاکھ 59 ہزار 60 شیئرزکاکاروبارہوا،جوبدھ کی نسبت 1 کروڑ 85 لاکھ70ہزار880شیئرزکم ہیں۔قیمتوں کے اتار چڑھاؤ کے حساب سے یونی لیورفوڈز کے حصص سر فہرست رہے ،جس کے حصص کی قیمت 275.00 روپے اضافے سے5775.00روپے اور سائفر فیبرکس کے حصص کی قیمت44.75روپے اضافے سے 950.00روپے پر بند ہوئی۔نمایاں کمی باٹاپاک کے حصص میں ریکارڈکی گئی،جس کے حصص کی قیمت 58.98 روپے کمی سے1341.02روپے اورایبٹ لیبارٹریز کے حصص کی قیمت22.17روپے کمی سے 446.83روپے ہوگئی ۔جمعرات کوکے الیکٹرک لمیٹڈ کی سرگرمیاں89لاکھ79ہزار500شیئرز کے ساتھ سرفہرست رہیں۔