اے پی سی مایوس کن رہی، ذاتی مفادات کی باتیں ہوئیں،اسد اللہ بھٹو

124

سکھر(نمائندہ جسارت)جماعت اسلامی پاکستان کے مرکزی نائب امیر ، سابق رکن قومی اسمبلی اسدا للہ بھٹو نے آل پارٹیز کانفرنس کو مایوس کن قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ اے پی سی کا ایجنڈا باہمی مفادات اور مقدمات کا تحفظ بنا رہا،عوام کو درپیش معاشی مسائل کے حل کے بجائے نان ایشوز کو اٹھایا گیا ، اصل عوامی مسائل زیر بحث نہیں لائے گئے۔ سکھر میں امیر ضلع مولانا حزب اللہ جکھرو کے ساتھ میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے انہوںنے مزید کہا کہ اے پی سی میں بجٹ کا مسئلہ فوکس نہیںکیا گیا ، صرف مقدمات اور مفادات کی باتیں زیر بحث لائی گئیں۔انہوں نے کہا کہ موجودہ بجٹ کیونکہ آئی ایم ایف کا پیش کردہ ہے اس لیے اس کی مخالفت نہیںکی جا رہی بلکہ نان ایشوز کو اٹھایا جا رہا ہے، اپوزیشن کی بڑی جماعتوں کی جانب سے میثاق جمہوریت کی طرح صرف باتوں سے کام چلایا جا رہا ہے، بجٹ ، ڈالر کی پرواز، اور مہنگائی و معاشی اقدامات کے حوالے سے کوئی بات نہیں اٹھائی جا رہی ، اسدا للہ بھٹو نے کہا کہ جماعت اسلامی ہی عوام کی اصل نمائندگی کر رہی ہے،جماعت اسلامی نے ملک بھر میں عوام دشمن معاشی اقدامات کیخلاف تحریک کا آغاز کردیا ہے،30جون کو کراچی سے عوامی مارچ سے ہوگا۔انہوں نے میڈیا سے اپیل کی کہ وہ جماعت اسلامی کی تحریک کی کوریج کرے تاکہ عوام کو اصل صورتحال سے آگاہی حاصل ہو اور وہ جماعت اسلامی کی حقیقی عوامی نمائندگی اور دیگر کی مفاد پرستی کی سیاست میںفرق کر سکیں ۔انہوں نے کہا کہ حکومت نے غیر ترقیاتی اخراجات اضافہ اور تعلیم وصحت کے بجٹ میں کٹوتی کی ہے۔ قبل ازیں انہوںنے امیر جماعت اسلامی محمد صفر چاچڑ سے انکے بھائی محمد سلیمان چاچڑ کی وفات پر اظہار افسوس و رتعزیت کی اور دعا کی ، امیر ضلع سکھر مولانا حزب اللہ جکھرو، مولانا عتیق احمد لاشاری ، مولانا سلطان لاشاری بھی انکے ساتھ تھے ۔