بینکوں نے بائیومیٹرک کی مقررہ مدت سے قبل ہی اکائونٹس بلاک کردیئے،آن لائن ٹرانزیکشن بھی بند

173

کراچی (اسٹاف رپورٹر) بینکوں نے کھاتے داروں کے بائیومیٹرک کے لیے بینک دولت پاکستان کی دی گئی مدت ختم ہونے سے قبل ہی کھاتے داروں کے اکاؤنٹس بلاک کردیے ۔ بینک دولت پاکستان نے تمام بینکوں کو ہدایت کی تھی کہ وہ تمام کھاتے داروں کی بائیومیٹرک ویری فکیشن کروائیں اور جو کھاتے دار بائیومیٹرک کروانے میں 30 جون تک ناکام رہیں ، ان کی ٹرانزیکشن نہ کی جائیں تاہم بینکوں نے بینک دولت پاکستان کی دی گئی مدت کے خاتمے سے قبل ہی ایسے کھاتے داروں کی تمام ٹرانزیکشن روک دی ہیں جنہوں نے اب تک بائیو میٹرک نہیں کروایا ہے ۔ بینکوں کی جانب سے بغیر اطلاع کھاتے داروں کو دی جانے والی خدمات روک دینے سے پیچیدگیاں پیدا ہوگئی ہیں ۔ خاص طور سے وہ کھاتے دار جنہوں نے کاروباری سودوں یا کسی فیس کی مد میں چیک کے ذریعے ادائیگی کی تھی ، بینکوں کی جانب سے بغیراطلاع اور بلاجواز چیکوں کو کلیئر نہ کرنے کی بناء پر ان کے چیک باؤنس ہوگئے اور ان کاروباری حضرات کی ساکھ کو نقصان پہنچا ۔ اسی طرح بائیو میٹرک نہ کروانے والے کھاتے داروں کے اے ٹی ایم کارڈ بھی بلاک ہونے سے شہری شدید پریشانی کا شکار ہوگئے ۔ وہ شہری جو شدید مالی ضرورت کے تحت اپنے کھاتوں سے رقوم نکلوانے اے ٹی کارڈ استعمال کرنے کی کوشش کررہے ہیں ، ان کے لیے مشین پر پیغام آرہا ہے کہ مشین آپ کا کارڈ نہیں پڑھ پارہی ہے ۔ کھاتے داروں کے مطابق یہ امر حیرت انگیز ہے کہ دی گئی مدت کے خاتمے سے قبل ہی اس پر بینکوں نے عملدرآمد شروع کردیا ہے۔اب تک بینک دولت پاکستان نے ایسے بینکوں کے خلاف کوئی کارروائی نہیں کی ہے جنہوں نے بینک کھاتوں میں رقم موجود ہونے کے باوجود چیک باؤنس کیے ۔